کورنٹائن سینٹر بنانے کے خلاف: مولانا آزاد نیشنل انسٹیوٹ آف ٹیکنالوجی کے طلبا کا احتجاج جاری


بھوپال7جون(نیانظریہ بیورو)
راجدھانی بھوپال میں کورونا کے معاملے میں روز بروز اضافہ ہوتا جارہا ہے، ایسے میں ضلع انتظامیہ نے بھوپال کےمولانا آزاد نیشنل انسٹیوٹ آف ٹیکنالوجی ( مینٹ )ہاسٹل کو کوارنٹائن سینٹر بنادیا ہے۔ جس کے خلاف طلبا کا احتجاج جاری ہے ۔ طلباءکے ذریعہمختلف کوششیں کی جارہی ہےں۔ سوشل میڈیا پر کیمپین چلانے کے بعد اب طلبا پرامن احتجاج کررہے ہیں۔ جس میں طلبا شجرکاری اور دیگر انوکھے طریقے سے اپنی بات حکومت تک پہنچانے کی کوشش کررہے ہیں۔ دراصل 22مارچ کے بعد جب پورے ملک میں لاک ڈاﺅن نافذکیاگیا تھا، اس وقت طلبا کالج کو چھوڑکر اپنے گھر چلے گئے تھے ، ایسے میں طلباءکا سامان ہاسٹل میں ہی رہ گیا ، لیکن طلبا اپنے گھروں میں تھے اور ان کے ہاسٹل کے تالے توڑ دیئے گئے۔ ضلع انتظامیہ نے مینٹ کے ہاسٹل نمبر11کو کوارنٹائن سینٹر بنایا ہے اور ہاسٹل کے 300کمرے کے تالے توڑ کر طلبا کا سامان وہاں سے باہر نکال دیا ہے۔ جس کے بعد سے ہی طلباءسوشل میڈیا کے ذریعہ اس کی مخالفت کر رہے ہیں ۔ وہیں طلبا کا کہنا ہے کہ ہم مینٹ کے ہاسٹل کو کوارنٹائن سینٹر سے ہٹانے کے لئے احتجاج کررہے ہیں۔ جس کے لئے مختلف قسم کی کوششیں کرچکے ہیں۔ اس کے باوجود کالج انتظامیہ اور حکومت ان کی بات نہیں سن رہی ہے۔ طلبا کا کہنا ہے کہ بہت بڑا کالج ہے ، کئی ساری بلڈنگ ہیں، بچوں کے ہاسٹل کو چھوڑ کر کسی بھی ہال کو کوارنٹائن سنیٹر بنایا جاسکتا تھا۔ لیکن ایسا نہیں کیا گیا ۔ طلبا نے کہا کہ ان کا سامان کمرے سے نکال کر پھینک دیا گیا ،جس کے خلاف احتجاج کررہے ہیں۔
طلبا نے کلکٹر سے کی اپیل:
ایسے میں طلبا کئی مطالبات کو لے کر ستیاگرہ کررہے ہیں، جس میں وہ لوگوںخود سےبڑی تعداد میں شجرکاری کررہے ہیں۔ طلبا پرامن طریقے سے احتجاج کرتے ہوئے حکومت تک اپنی بات پہنچانے کی کوشش کررہے ہیں۔ ساتھ ہی طلبا نے بھوپال کلکٹر سے اپیل کیہے کہ وہ ہاسٹل کو کوارنٹائن سنیٹر سے آزاد کردیں۔ جس سے طلبا ہاسٹل واپس لوٹ سکیں اور اپنی آگے کی پڑھائی جاری رکھ سکیں۔