یونانی شفاخانہ نے اب تک تقریباً ایک لاکھ سے زیادہ لوگوں کو پلایا خصوصی کاڑھا

کورونا سے بچاﺅ:

بھوپال:6جون(نیانظریہ بیورو)
کورونا کے لئے این ٹی ڈوز ،میڈیسین یاکسی ویکسین کی فی الحال ایجاد نہیں ہو پائی ہے، لیکن مرض ہے کہ مسلسل بڑھتا جارہا ہے۔ ایسے میں مرض پر قابو پانے کی طاقت نہ ہو تو اس کی روک تھام کے طریقے تو اپنائے ہی جاسکتے ہیں۔ محکمہ آیوش نے اسی منشا کو آگے بڑھاتے ہوئے ان طریقوں کا استعمال کرنا شروع کردیا ، جن پر لوگوں کا صدیوں سے بھروسہ اور یقین ہے۔ محکمہ نے بیماری کو روکنے میں مددگار کاڑھے کو لوگوں میں عام کرنے کی ایک مہم چلائی اور گذشتہ تین مہینے سے مسلسل ہرروز تقریباً ایک ہزار لوگوں کو یہ بھروسے مند دوائی پلائی جارہی ہےں۔ سرکاری یونانی فارمیسی کے ڈاکٹر اعظم خان بتاتے ہیں کہ ملک اور ریاست میں کورونا کی آمد کے ساتھ ہی محکمہ آیوش نے محاذ سنبھال لیاتھا۔ محکمہ نے اپنے پاس موجود صدیوں پرانی اور بھروسہ مند دواﺅںکا استعمال شروع کیا۔ منشا یہ تھی کہ علاج کے لئے کسی این ٹی ڈوز یا ویکسین کا انتظار کرنے کے بجائے موجود ذرائع سے بیماری کے گھر کرنے کے حالات کو روک دیا جائے۔ ڈاکٹر اعظم نے بتایا کہ اسی سوچ کے ساتھ 19مارچ سے راجدھانی بھوپال سمیت پوری ریاست کے یونانی کلینک پر خاص طورپر تیار کیا گیاکاڑھا پلانے کی شروعات کی گئی ۔ یونانی شفاخانے سے لوگوں کو اس کی خوراک پلانے کے علاوہ اس دوا کوگھرگھر پہنچایا گیا اور لوگوں کو اس کی خوراک پلاکر کورونا سے محفوظ رہنے کی سمجھائش دی گئی۔ انہوں نے بتایا کہ محکمہ آیوش مدھیہ پردیش کمشنر ایم کے اگریوال کی ہدایت پر پوری ریاست کے آیورویدک ،ہومیوپیتھک اور یونانی اسپتالوں میں ایمیونیٹی بڑھانے والی دوائیاں مفت تقسیم کرنے کی شروعات کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ تب سے اب تک مسلسل ایک لاکھ سے زیادہ لوگوں تک یہ دوائیاں پہنچائی جاچکی ہیں۔ غورطلب ہے کہ راجدھانی بھوپال کے مارواڑی روڈ واقع یونانی شفاخانہ میں روزانہ شام 4.30سے 5.30بجے تک خصوصی کاڑھا،خاص جوشندہ پلایاجارہا ہے۔ ساتھ ہی روغنِ حیات کی باٹل مفت بانٹی گئی۔ ڈاکٹر اعظم نے بتایا کہ اس خصوصی کاڑھے میں 10دوائیاں ملی ہوئی ہیں، جسے ڈاکٹر محمد اعظم اور ڈاکٹر شاہین جمال نے تیار کیا ہے۔ اس میں ان کی مدد کے لئے شفاخانہ میں تعینات سینئر یونانی ڈاکٹر فہیم کوثر ، ڈاکٹر انور قادری، ڈاکٹر شاہد خان، ڈاکٹر سید شاہد علی، ڈاکٹر فردوس کوثر کا خاص تعاون ملا۔ ڈاکٹر اعظم نے بتایا کہ یہ خصوصی کاڑھا آیوش وزارت حکومت ہند کی رائے کے تحت ہے۔