علاج کی رقم ادا نہ کرنے پر 80 سالہ مریض کوبنا یایرغمال ، پانچ دن سے نہیں دیاکھانا

شاجاپور میںپرائیویٹ اسپتال کی ظالمانہ حرکت:

بھوپال/شاجاپور:6جون(نیانظریہ بیورو)
مدھیہ پردیش کے شاج پور شہر کے ایک نجی اسپتال سے انسانیت کو شرمسارکر دینے والی تصویر سامنے آئی ہے۔ بتایاجاتاہے کہ شاجاپورضلع میں پرائیویٹ اسپتال میں داخل ایک 80 سالہ مریض کو رسّی سے باندھ دیا گیا ہے کیونکہ اس کے پاس علاج بل کی ادائیگی کے لئے رقم نہیں ہے۔ مریض اور اس کی بیٹی پچھلے پانچ دن سے پریشان ہیں۔ لیکن اس کی فریاد سننے والا کوئی نہیں ہے۔
متاثرہ مریض نے بتایا کہ وہ راجگڑھ ضلع کا رہائشی ہے۔ علاج کے لئے شاج پور کے سٹی ہسپتال آئے تھے۔ داخل ہونے سے قبل اس نے گیارہ ہزار روپے اسپتال میں جمع کرا رکھے تھے۔ لیکن جب چھٹی ہونے کا وقت آیا تو اسپتال نے 11 ہزار 270 روپے کا ایک اور بل اداکرنے کوکہا۔ بزرگوں کے پاس رقم نہ ہونے کی صورت میں انہیں اسپتال سے چھٹینہیں ملی۔ اسپتال انتظامیہ نے پلنگ سے ہاتھ پاو¿ں باندھ رکھے ہیں تاکہ یہ مریض کہیں نہیں جاسکے۔ یہ الزام ہے کہ 5 دن سے بزرگ کو کھانا بھی نہیں مل رہا ہے۔
مصیبت زدہ مریض کی بیٹی نے بتایا کہ وہ جتنی رقم لے کر آئی تھی ، وہ سب اس نے اسپتال کودیدیا۔اب پیسوں کا بندوبست نہیں ہے۔ اسپتال انتظامیہ اس بزرگ کی چھٹی نہیں کررہی ہے۔اسپتال میں داخل دیگر مریض بھی متاثرہ افراد کے الزامات کو جواز بنا رہے ہیں۔