فصلوں کے نقصان پر معاوضے کا مطالبہ: بھارتیہ کسان سنگھ نے کلکٹر دفتر کے سامنے کیا مظاہرہ،وزیر اعلیٰ کے نام دیا میمورنڈم

اُجین10 جنوری(نیا نظریہ بیورو)دو روز قبل اولہ باری سے کسانوں کی فصلیں تباہ ہو گئیں۔ بھارتیہ کسان سنگھ نے پیر کو کلکٹر کے دفتر کے سامنے مظاہرہ کرتے ہوئے معاوضہ کا مطالبہ کیا۔ کسانوں نے فوری اثر سے فصلوں کا سروے کر کے معاوضہ دینے کا مطالبہ کیا ہے۔ کسانوں نے 2020 میں ہوئے سویا بین کے نقصان کے لیے بیمہ کی رقم دینے نے کا مطالبہ کیا۔
7 جنوری کو اُجین کے کئی علاقوں میں شدید بارش اور اولہ باری کی وجہ سے کسانوں کی فصلیں تباہ ہو گئیں۔ ان فصلوں کے معاوضے کے لیے کسان یونین نے سینکڑوں کسانوں کے ساتھ مظاہرہ کیا۔ کسانوں نے وزیر اعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان کے نام ایک میمورنڈم پیش کیا۔
کسان سنگھ کے بھرت سنگھ نے بتایا کہ لیکوڑا، لمب پیپلیہ، گوندیا، برجراج کھیڑی، گنگیڑی، ٹنکاریا، ہمیرکھیڑی، ٹکواس، بادل کھیڑی، جھرولیا، فتح آباد، اجرانہ، ماکڑون، انہیل، منگرولا سمیت دیگر گاو ¿ں کی فصلیں بری طرح متاثر ہوئی ہیں۔ اس میں کئی مقامات پر فصلوں کو سو فیصد نقصان پہنچا ہے۔ بعض دیہات کی فصلیں ٹھپ ہو کر رہ گئی ہیں۔
کسان یونین کا مطالبہ ہے کہ جلد تمام جگہوں پر سروے کرایا جائے، فصلوں کی فزیکل تصدیق کے ساتھ ساتھ کسانوں کو جلد از جلد معاوضہ دیا جائے۔ کسانوں نے کلکٹر کے دفتر کے باہر نعرے بازی کی۔ کسانوں کا کہنا تھا کہ کسانوں نے آلو، پیاز اور لہسن کی فصل پر بہت زیادہ خرچ کیا ہے۔ فی الحال حکومت کو چاہیے کہ وہ 2020 میں سویابین کی فصلوں کی انشورنس رقم کسانوں کو دے تاکہ انہیں کچھ ریلیف مل سکے