سابق وزیر اعلیٰ کا حکومت پر طنز: کسانوں کی فصلیں برباد ہوگئی لےکن شیوراج کا صرف بیان آیا:کملناتھ

بھوپال10 جنوری(نیا نظریہ بیورو)کانگریس کے ریاستی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ کمل ناتھ نے شیوراج حکومت پر حملہ بولا ہے۔کمل ناتھ نے الزام لگایا کہ ریاست میں گزشتہ تین دنوں میں شدید اولا باری کی وجہ سے کئی کسانوں کی فصلیں برباد ہو گئی ہیں۔ اس کے باوجود مقامی انتظامیہ نے کوئی انتظام نہیں کیا۔ اس دوران صرف شیوراج کا بیان آیا۔ حقیقت یہ ہے کہ کسانوں کو راحت نہیں مل پارہی ہے۔ کمل ناتھ نے مطالبہ کیا ہے کہ کسانوں کو فوری معاوضہ دیا جائے۔
کمل ناتھ نے الزام لگایا کہ حکومت پنچایتی انتخابات نہیں کرانا چاہتی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت جو بھی آرڈیننس لے کر آئی وہ غیر آئینی ہے۔حکومت بغیر ریزرویشن،بغیر روٹیشن اور بغیر کسی حد بندی کے انتخابات کرانا چاہتی تھی۔ اس کی وجہ سے سب کے حقوق چھینے جا رہے تھے۔
کمل ناتھ نے مطالبہ کیا ہے کہ پنچایتی انتخابات ایک ساتھ روٹیشن، حد بندی اور ریزرویشن کے ساتھ اگلے دو ماہ میں کرائے جائیں۔ اگر انتخابات نہیں ہوئے تو گاو ¿ں گاو ¿ں اور بلاک اور ضلع سطح پر احتجاج کیا جائے گا۔
او بی سی ریزرویشن کے بارے میں ناتھ نے کہا کہ یہ مسئلہ اسمبلی میں اٹھایا گیا تھا۔ بی جے پی حکومت او بی سی مخالف رہی ہے۔ حکومت سے سوال کیا کہ 15 سال میں پسماندہ طبقے کے لیے کون سا قانون بنایا گیا، انہیں کیا سہولیات دی گئیں؟
دیگر پسماندہ طبقے کے طلباءکو دی جانے والی 1210 کروڑ کی اسکالرشپ پھنسی ہوئی ہے۔ بی جے پی نے اب تک اپنے دور اقتدار میں او بی سی کے لیے 27 فیصد ریزرویشن کے بارے میں بات نہیں کی ہے، جب کہ کانگریس اس سے پہلے 2003 میں دے چکی ہے۔ اس کے بعد جب میں وزیر اعلیٰ بنا تو میں نے 2019 میں 27 فیصد ریزرویشن دیا