پاکستانی وزیر قریشی کوسعودی سفیر سے ملاقات پر سوشل میڈیا پر تنقید کا سامنا

اسلام آباد ۔2 جنوری۔ پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کو سعودی عرب کے سفیر نواف بن سعید المالکی سے ملاقات کے دوران “بے عزتی” کے موقف پر سوشل میڈیا پر پاکستانی شہریوں نے تنقید کا نشانہ بنایا۔ جیو نیوز کے مطابق، منگل کو اسلام آباد میں قریشی سے ملاقات کی تھی۔ بہت سے سعودیوں نے قریشی کو ایک ٹانگ کراس کر کے بیٹھے ہوئے اور دوسری کو المالکی کی جارحیت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے پایا۔ ایک سعودی شہری نے ٹویٹر پر کہا کہ ” پاکستانی وزیر کے بیٹھنے کا انداز سفارتی آداب سے عاری تھا۔ ایک اور ناراض سعودی شہری نے سوشل میڈیا پر لکھا: “سعودی ہونے کے ناطے ہم یہ قبول نہیں کرتے کہ پاکستانی وزیر خارجہ سعودی سفیر کی اس طرح توہین کرے۔” سعودی ٹویٹر صارف نے کہا کہ وزیر کا رویہ جان بوجھ کر تھا،” سچ کہوں تو اگر میں سعودی سفیروں میں سے ہوتا تو چھوڑ دیتا۔” پاکستانی شہریوں نے بھی قریشی کی مذمت کی۔ قریشی کے بیٹھنے کی پوزیشن نے اسے “سفارتی اصولوں کے خلاف” قرار دیا۔ ایک صارف نے لکھا کہ ’’پاکستان کے وزیر خارجہ کو آداب سیکھنے کی اشد ضرورت ہے، پاکستان ہر سال سعودی عرب سے بھیک مانگتا ہے‘‘۔ ایک اور ٹویٹر صارف نے کہا، “شاہ محمود کو اپنے غیر اخلاقی رویئے پر جلد از جلد معافی مانگنی چاہیے جو کہ سراسر سفارتی اصولوں کے خلاف ہے۔