شہباز شریف نے پیٹرول کی قیمتوں میں مسلسل اضافے پر پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان سے استعفیٰ کا مطالبہ کر دیا

اسلام آباد2 جنوری۔ پاکستان کے قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے بڑھتی ہوئی مہنگائی کے درمیان ایندھن کی قیمتوں میں حالیہ اضافے پر ملک کے وزیر اعظم عمران خان سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا ہے۔ جیو نیوز نے ہفتے کے روز پاکستان مسلم لیگ نواز کے صدر شہباز کے حوالے سے کہا کہ ” دنیا بھر کی حکومتیں قیمتوں میں کمی لا کر تہوار مناتی ہیں، لیکن اس کے برعکس عمران نیازی نے عوام پر مہنگائی کا بم گرا دیا ہے۔” شہباز شریف نے امید ظاہر کی کہ نیا سال عوام کو مہنگائی، معاشی بدحالی، بھوک، بیماریوں اور ناانصافیوں سے نجات دلائے گا۔ ادھر پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی)کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے بھی حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ عمران خان نے دعویٰ کیا تھا کہ 2021 خوشحالی کا سال ہوگا، لیکن 2022 آچکا ہے، تو دعوے کہاں گئے؟ اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ ملک میں پی ٹی آئی کے دور میں ایک سال پہلے کے مقابلے میں زیادہ مہنگائی دیکھنے میں آئی ہے، انہوں نے کہا کہ بڑھتی ہوئی مہنگائی کے باوجود عمران خان کی حکومت پچھلی حکومتوں کو مورد الزام ٹھہراتی ہے اور انہیں نااہل کے طور پر پیش کرنے کی کوشش کرتی ہے۔ یہ تنقید اس وقت سامنے آئی جب حکومت پاکستان نے جمعہ کو ایندھن کی قیمتوں میں اضافہ کیا تھا اور نئی قیمتوں کا اطلاق 2022 کے پہلے دن ہفتہ سے ہوگا۔ پی ٹی آئی حکومت نے جمعہ کو پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں پاکستانی روپے 4 روپے فی لیٹر کا اضافہ کیا تھا۔