علاقہ حیدر آباد کرناٹک کے ساتھ نہایت سوتیلا سلوک برتنے کا حکومت پر رکن اسمبلی و سابق وزیر پریانک کھرگے کا الزام


گلبرگہ 30دسمبر:ممتاز کانگریسی قائد، رکن اسمبلی و سابق وزیر کرناٹک مسٹر ملیکارجن کھرگے نے ریاست کرناٹک کی بی جے پی حکومت پر الزام عائد کیا ہے اس نے ریاست کے علاقہ حیدر آبادکرناٹک (تبدیل شدہ نام کلیان کر ناٹک) کے ساتھ سوتیلی ماں جیساسلوک شرو ع کردیا ہے۔ پریانک کھرگے نے کہاکہ چیف منسٹر ایس آربومائی نے اپنے دورہ ء علاقہ حیدر آباد کرناٹک کے موقع پرکلیانکرناٹکاتسو کی تقریب میں شرکت کرتے ہوئے اس علاقہ کی ترقی کے لئے جو وعدے کئے تھے وہ سارے وعدے انھوں نے فراموش کردیئے ہیں۔
منگل کے دن گلبرگہ میں ایک صحافتی کانفرینس سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر پریانک کھرگے نے کہا کہ مسٹر بومائی کلیان کرناٹک علاقائی ترقیاتی بورڈ کو ترقیاتی کاموں کے لئے مناسب فنڈس جاری کرنے میں بھی ناکام ہوگئے ہیں اور اپر کرشناپروجیکٹ کے تیسرے مرحلہ کے کاموں کے لئے بھی انھوں نے فنڈس الاٹ نہیں کئے ہیں۔ اس کیعلاوہ چیف منسٹرنے وعدہ کیا تھا کہ وہ علاقہ حیدر آبادکرناٹک میں سرمایہ کاری سے متعلق ایک اجلاس بھی منعقدکریں گے، وہ اس وعدہ کو بھی وفا نہیں کرسکے ہیں۔ مسٹرکھرگے نے اس موقع پر مرکزی حکومت پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ نہایت افسو کی بات ہے کہ ضلع گلبرگہ میں جو 1000ایکڑ اراضی ٹیکسٹائیل پارک کے قیام کے لئے منظور کی گئی تھی، مرکز نے ٹیکسٹائیل پارک قائم کرنے کی یہ منظور شدہ تجویز بھی واپس لے لی ہے۔
کلیان کرناٹک ترقیاتی بورڈکے لئے سابق میں منظور شدہ 1,500کروڑ روپیوں کے ضمن میں مسٹر کھرگے نے بتایا کہ ریاستی حکومت نے سال2019-20کے دوران صرف1,125کروڑروپیوں کی توثیق کی ہے۔سال 2020-21میں حکومت نے توثیق شدہ 1,131کروڑروپیوں کے مقابلہ میں صرف 1000کروڑروپئےء جاری کئے ہیں۔ اس طرح 2021-22 کے دورانجملہ 2,234ترقیاتی کاموں میں سے صرف 16فیصد کام ہی مکمل ہوسکے ہیں۔ اسی طرح سابق کے تین مالی برسوں کے دوران حکومتنے منظور شدہ 4,124.83کروڑروپیوں کے مقابلہ میں صرف 2,572.02کروڑوپئے ہی جاری کئے۔ مسٹرکھرگے نے حکومت پر زور دیا اور مطلابہ کیا کہ مابقی 1,921.81کروڑ روپئے بھی فوری جاری کردئے جائیں تاکہ کلیان کرناٹک علاقائی ترقیاتی بورڈ کے مابقی تعطل میں پڑے ہوئے ترقیاتی کام بھی مکمل ہوسکیں۔