جماعت سے وابستہ بیرونی ممالک کے افراد کوگرفتارکرنابین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی


بھوپال:27مئی(نیانظریہ بیورو)
کورونا وباءکے دوران نشانے پرآئے تبلیغی جماعت کے لوگوں کے ساتھ اب قانونی طورپررعایت دینے کا عمل شروع ہوچکا ہے۔ جبل پور ہائی کورٹ نے ان غیر ملکی شہریوں کی ضمانت منظور کرلی ہے جوجماعت سے وابستہ تھے۔
دیناکے کئی ملکوں اورملک بھرسے جماعت میں بھوپال آئے افراد کوجبل پور ہائی کورٹ سے بڑی راحت ملی ہے۔ بروزمنگل جماعت سے وابستہ8 افرادکو عدالت سے ضمانت مل گئی ہے۔ معلوم ہوکہ ویزا کی شرائط اور لاک ڈاو¿ن کی خلاف ورزی کرنے کی وجہ سے راجدھانی کے تھانہ تلیا نے معاملہ درج کیاتھا۔غورطلب ہے کہ ان جماعتیوں میں 5 کرغزستان ، 1 ازبکستان اور 2 بہار کے لوگ شامل ہیں۔
جبل پور ہائی کورٹ کے وکیل انکت سکسینہ نے اس معاملے میں ضمانت کی درخواست دائر کی تھی۔بروزمنگل جسٹس سوجے پال نے اس درخواست کی سماعت کی اور متعلقہ 8افراد کی ضمانت منظور کرلی۔
باکس
یہ سب 10 دنوں سے بھوپال جیل میں قیدتھے:
معلوم ہوکہ مدھیہ پردیش ملک کی پہلی ایسی ریاست ہے جہاں جماعتیوں کے خلاف کارروائی کی گئی تھی،اورجنہیں کورونا وائرس پھیلانے کا مجرم قرار دیا گیا تھا۔ راجدھانی میں 58 کے قریب جماعت کے افراد کو گرفتار کرکے جیل بھیج دیا گیاتھا۔ اسی دوران ، ضلع سیہور کے آشٹہ سے 14 افراد کوبھی گرفتار کیا گیا تھا۔
غیر ملکی قانون کی بھی خلاف ورزی ہوئی:
غیر ممالک سے مذہبی پروگرام میں شریک ہونے آئے لوگوں کوگرفتاری سے قبل نہ توان کے ملک کواطلاع دی گئی اورنہ ہی بین الاقوامی قانون پرعمل کیاگیا۔ضابطہ کے مطابق ، انھیں گرفتارکرنے یا جیل بھیجنے سے پہلے ان ممالک سے متعلقہ افراد پرقانونی کارروائی کرنے کی اجازت لینی چاہئے تھی یا انہیں ان کے ممالک کے حوالے کردیا جانا چاہئے تھا۔ جس کے بعد وہاں کے قانون کے مطابق ان کے ممالک میں کارروائی کی جانی تھی۔