بھوپال میںکیرل کے پھنسے 60 طلباءراہل گاندھی کی پہل پربس سے ہوئے روانہ

بھوپال میںکیرل کے پھنسے 60 طلباءراہل گاندھی کی پہل پربس سے ہوئے روانہ
بھوپال:22مئی(نیانظریہ بیورو)
ملک میں چوتھا لاک ڈاون جاری ہے ، پچھلے دو ماہ سے اس لاک ڈاو¿ن نے ملک کی مختلف ریاستوں میں مزدوروں اور طلبا کو پھنسارکھا ہے۔ کیرالہ سے تعلق رکھنے والے اس طرح کے 60 طلبا بھوپال میں پھنسے ہوئے تھے ، تمام تر کوششوں کے باوجود یہ طالب علم اپنے گھر نہیں لوٹ سکے تھے۔ اسی دوران کانگریس کے سابق صدر اور کیرالہ کے وایاناد سے رکن پارلیمنٹ راہل گاندھی کو اس کے بارے میں معلوم حاصل ہوئی۔ چنانچہ انہوں نے ان طلبا کی مدد کے لئے مدھیہ پردیش کانگریس کے قائم مقام صدر جیتو پٹواری سے رابطہ کرنے کو کہا۔جس کے بعد ان طلباءکوبسوں سے کیرل روانہ کیاگیا۔
بتایاجاتاہے کہ کیرل کے طلباءنے فوری طورپر جیتو پٹواری سے رابطہ کیاتھا۔ جس کے بعد جیتو پٹواری اور مدھیہ پردیش یوتھ کانگریس کے صدر اور کانگریس ایم ایل اے کنال چودھری نے بھوپال میں پھنسے ہوئے طلباءکے لئے لاک ڈاو¿ن کی وجہ سے بس کا انتظام کیا۔ اس دوران ، جیتو پٹواری اور کنال چودھری نے 25 سے زائد طلباءکی پہلی کھیپ جمعہ کے روز بھوپال سے کیرالہ کے لئے بس پر بھیجی۔ اسی کے ساتھ دونوں رہنماو¿ں نے بتایا ہے کہ اب وہ جلد ہی باقی طلباءکو دوسری ڈویزن میں بس کے راستے گھر واپس بھیجیں گے۔ اسی اثنا میں ، مدھیہ پردیش یوتھ کانگریس کے صدر اور کانگریس کے ایم ایل اے کنال چودھری نے بتایا کہ پارٹی کے تمام رہنماو¿ں کو کانگریس صدر محترمہ سونیا گاندھی اور سابق وزیر اعلی کمل ناتھ نے پہلے ہی ہدایت کی تھی کہ وہ اپنے اپنے ریاستوں سے لوگوں کو ان کے گھر بھیجیں۔ خیال ر ہے کہ اس ایپی سوڈ میں ، جب کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی کے دفتر سے ان بچوں کے بارے میں معلومات ملی۔ لہذا ریاستی کانگریس کے ایگزیکٹو صدر جیتو پٹواری نے ان طلباکو گھر پہنچانے کی ذمہ داری پوری کردی۔ تاہم ، یہ پہلا موقع نہیں ہے جب کنال چودھری یا جیتو پٹواری نے ایسا کام کیا ہو۔ اس سے قبل کنال چودھری نے کالاپیپل اور ستنا کے مزدوروں کو واپس لانے کے لئے کام کیا تھا ، ان میں بھلواڑہ ، راجستھان میں پھنسے ہوئے افراد بھی شامل تھے۔