حکومت کافیصلہ: پرائیویٹ اسکول طلباءسے صرف ٹیوشن فیس لے سکتے ہیں


بھوپال :17مئی(نیانظریہ بیورو)
ریاست میں جاری لاک ڈاو¿ن کی وجہ سے تمام اسکول مکمل طور پر بند ہیں۔ وہیں نئے سیزن کے آغاز سے متعلق پس وپیش باقی ہے ۔ لیکن اس صورتحال میں بھی ، نجی اسکولوں کی فیس کے لئے والدین پر مستقل دباو¿ ہے۔ جس کے بارے میں محکمہ تعلیم میں والدین کی طرف سے بھی شکایات کی جارہی ہیں۔ اب شیو راج حکومت نے اس معاملے پر ایک بڑا فیصلہ لیا ہے۔ جس کے تحت نجی اسکول صرف ٹیوشن فیس وصول کرسکیں گے ، اس کے علاوہ کوئی فیس نہیں لی جائے گی۔دراصل ، والدین کا کہناتھا کہ جب اسکول نہیں چل رہے ہیں تو پھر نجی اسکول اس عرصے کے دوران فیس کیوں مانگ رہے ہیں۔ والدین کی شکایت پر دھیان دیتے ہوئے ، ریاستی حکومت نے ایک بڑا فیصلہ لیا ہے۔ اسی دوران ،وزیراعلیٰشیوراج سنگھ چوہان کا کہنا ہے کہ ریاست میں لاک ڈاو¿ن کی وجہ سے 19 مارچ سے اسکول مکمل طور پر بند ہیں۔ اس وجہ سے نجی اسکول طلباءسے صرف ٹیوشن فیس وصول کرسکتے ہیں۔ اس کے علاوہ کوئی اضافی فیس وصول نہیں کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ ٹیوشن فیس ضروری ہے تاکہ اسکول دوبارہ چلایا جاسکے۔ لیکن اس کے علاوہ ، لاک ڈاو¿ن مدت کے دوران کسی بھی قسم کی کوئی فیس نہیں لی جائے گی۔ اس سلسلے میں احکامات جاری کردیئے گئے ہیں۔ جو تمام کلکٹرس اور ضلع تعلیمی افسران کو بھیج دیئے گئے ہیں۔اس ہدایت کے مطابق ، بتایا گیا ہے کہ موجودہ تعلیمی سیشن 2020-21 کے لئے ، لاک ڈاو¿ن کے دوران نجی اسکولوں کے ذریعہ صرف ٹیوشن فیس وصول کی جاسکتی ہے ، اس کے علاوہ ، کوئی دوسری فیس نہیں لی جائے گی۔ یہ حکم اسکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کے ڈپٹی سکریٹری کے کے دویدی نے جاری کیا ہے۔