آیور وید اور ہومیوپیتھک دوائیوں سے صحتیاب ہونگے کوروناکے مریض، تجربہ ہواشروع


بھوپال:15مئی(نیانظریہ بیورو)
آیوروید میں بہت سی صلاحیتیں موجودہیں۔ اب کورونا مثبت مریضوں پر آیورویداور ہومیوپیتھک ادویات کااستعمال کر جانچ کی جارہی ہے۔ جبکہ مثبت مریضوں کو اب ارویا کسیان کاڑھی کھلایا جارہا ہے ، کورونا مثبت مریضوں کو ہومیوپیتھی کالج میں ہومیوپیتھی کی دوائیوں سے علاج کیا جائے گا۔ اس کے لئے ، تین انتہائی پست درجے کے کورونا مریضوں کو کالج آف ہومیوپیتھی میں داخل کیا گیا ہے۔غورطلب ہے کہ بھوپال اندور اوراُجین کے کورونا مریضوں اور مشتبہ افراد پر آیورویدک کاڑھی استعمال کی جارہی ہے۔ محکمہ آیوش امید کرتا ہے کہ اس سے مریضوں کی بازیابی میں تیزی آئے گی۔ بتایا جارہا ہے کہ کاڑھی 10 روزہ کورس ہے ، جس کے بعد محکمہ آیوش اپنے نتائج پر نگاہ ڈالے گا۔ کاڑھے کو آروگیہ کساین20 کا نام دیا گیا ہے۔ یہ کاڑھی 7 قسم کی دوائیں ملا کر تیار کی گئی ہے۔ 20 گرام کاڑھی کی خوراک دی جارہی ہے۔ داخل مریضوں کے ساتھ ، یہ کاڑھی سنگرودھ اور الگ تھلگ مریضوں کو بھی دی جارہی ہے۔ محکمہ کو امید ہے کہ اس سے مریض کی قوت مدافعت میں اضافہ ہوگا اور وہ جلد صحت مند ہوگا۔
ہومیوپیتھی کالج میں مریض کئے گئے داخل:
محکمہ صحت کی اجازت کے بعد اب کورونا مریضوں کا بھی ہومیوپیتھ سے علاج کیا جائے گا۔ اس کے استعمال کے لئے ، 3 انتہائی کم تعدد کورونا مریضوں کو گورنمنٹ ہومیوپیتھی کالج کوویڈ 19 سنٹر میں داخل کیا گیا ہے۔ ہومیوپیتھی سے علاج کی اجازت مرکزی حکومت سے بھی موصول ہوگئی ہے۔ تاہم ، گاندھی میڈیکل کالج کی کمیٹی کی منظوری کے ساتھ ہی معاملے میں تجربہشروع کردیا جائے گا۔ ہومیوپیتھی کالج میں قائم تنہائی وارڈ میں علاج کے لئے 50 نجی کمروں سمیت 50 مریضوں کے انتظامات کیے گئے ہیں۔ ہومیوپیتھک ڈاکٹر ان مریضوں کا علاج یہاں کریں گے۔غورطلب ہے کہ مرکزی حکومت کی جانب سے بھوپال ضلع میں کورونا مثبت مریضوں پر آیورویدک اور ہومیوپیتھک دوائیں آزمانے کی اجازت موصول ہوگئی ہے۔ جس کی وجہ سے مثبت مریضوں کو اب خاص طورپر انسانوں میں قوت مدافعت میں اضافہ کرنے والی دوا کاڑھی کااستعمال کیاجارہاہے۔جس سے مریض بہت جلد صحتیاب ہونگے۔