سورت سے ہریدوار پہنچی مزدور اسپیشل ٹرین سے 167 مسافر لاپتہ، انتظامیہ پریشان

لاک ڈاؤن میں الگ الگ ریاستوں میں پھنسے مہاجر مزدوروں کو ان کی ریاست پہنچانے کے لیے انڈین ریلویز کے ذریعہ مزدور اسپیشل ٹرینیں چلائی جا رہی ہیں۔ اس درمیان مزدور اسپیشل ٹرینوں سے لوگوں کے غائب ہونے کا معاملہ بھی سامنے آ رہا ہے۔ معاملہ گجرات کے سورت سے اتراکھنڈ کے ہریدوار پہنچی ایک مزدور اسپیشل ٹرین کا ہے جن میں ایک دو نہیں بلکہ 167 مسافر غائب ہیں۔

بتایا جاتا ہے کہ 12 مئی کو گجرات کے سورت ضلع سے ہریدوار پہنچی مزدور اسپیشل ٹرین میں سوار 167 مسافروں کا پتہ نہیں چل پا رہا ہے۔ ایک ساتھ اتنے لوگوں کے غائب ہونے سے ضلع انتظامیہ اور محکمہ صحت کے افسران حیران ہیں اور ایک ہنگامی صورت حال پیدا ہو گئی ہے۔ ضلع انتظامیہ اب ان لوگوں کی تلاش میں مصروف ہو گئی ہے جو سورت میں ٹرین پر سوار تو ہوئے لیکن ہریدوار تک نہیں پہنچے۔

سورت سے اسپیشل ٹرین منگل کے روز ہریدوار پہنچی تھی۔ اس ٹرین میں کل 1340 لوگ سوار ہوئے تھے۔ لوگوں کی ایک فہرست بھی ہریدوار انتظامیہ کو سورت انتظامیہ کے ذریعہ دستیاب کرائی گئی تھی۔ لیکن جب یہ اسپیشل ٹرین ہریدوار ریلوے اسٹیشن پہنچی اور مسافروں کی نگتی انتظامیہ کے ذریعہ کی گئی تو کئی مسافر لاپتہ نظر آئے۔ گنتی مکمل کرنے پر پتہ چلا کہ ہریدوار اسٹیشن کل 1173 مسافر پہنچے تھے اور 167 لوگ موجود نہیں تھے۔ اس کے بعد ضلع انتظامیہ کے افسران حرکت میں آئے اور سورت کے افسران سے فوراً رابطہ کیا۔

اس پورے معاملے میں ضلع مجسٹریٹ روی شنکر نے بتایا کہ ٹرین راستے میں کہیں رکی ہے یا اس کی رفتار دھیمی ہوئی ہے، اس سلسلے میں پتہ کیا جا رہا ہے۔ ہو سکتا ہے کہ کچھ مسافر راستے میں اتر گئے ہوں گے، لیکن فی الحال اس کی جانچ کی جا رہی ہے اور حتمی طور پر کچھ نہیں کہا جا سکتا۔ روی شنکر نے مزید کہا کہ سورت کے افسران سے رابطہ کر سبھی لوگوں کے نام اور پتے طلب کیے جا رہے ہیں۔ یہ بھی پتہ لگایا جا رہا ہے کہ کتنے لوگ وہاں سے ٹرین میں سوار ہوئے۔ اگر یہ سامنے آیا کہ یہ لوگ راستے میں ٹرین سے اترے ہیں اور خود سامنے نہیں آئے تو سبھی کے خالف قتل کی کوشش کا مقدمہ درج کرایا جائے گا۔

ضلع مجسٹریٹ نے بتایا کہ انتظامیہ کے ذریعہ ہریدوار میں آنے والے مہاجرین کے لیے تھرمل اسکریننگ اور میڈیکل جانچ کا انتظام کیا گیا ہے، اس کے بعد سبھی لوگوں کو گھر بھیج دیا جاتا ہے۔ اگر یہ لوگ قصداً لاپتہ ہوئے ہیں تو ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔