مندروں میں پوجاکے سامان کےلئے 5ہزار اورپچاریوںکی تخواہ ساڑے7 ہزارہرماہ دے حکومت:کمل ناتھ


بھوپال:13مئی(نیانظریہ بیورو)
کورونا وائرس کی وجہ سے پورے ملک میں لاک ڈاو¿ن نافذ ہے،جس کی وجہ سے مندروں اور خانقاہوں(مٹھ) کو بھی بند کردیا گیا ہے ،مٹھوں اور مندروں میں عقیدت مندوں کی نقل و حرکت مکمل طور پر بند ہے ، اس صورتحال میں مندروں میں پوجا کے انتظامات اور وہاں رہنے والوں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ چونکہ یہ انتظام مندروں میں نذرانہ اور چندہ کے ساتھ ہوتاہے ، لیکن گذشتہ 2 ماہ سے مندر کی بندہونے کی وجہ سے چندہ رک گیا ہے ، ان حالات کے پیش نظر ، سابق وزیر اعلی کمل ناتھ نے وزیر اعلی شیوراج سنگھ کو خط لکھ کر مطالبہ کیا ہے کہ اگلے 3 مہینوں تک 5 ہزار مندروں کی پوجا کے انتظامات کے لئے اوروہاں رہنے والوں (پجاریوں)کے لئے3 ماہ تک ساڑھے سات ہزار روپے کی مالی مدد فراہم کرنے کی زحمت کرے ریاستی حکومت۔واضح رہے کہ کمل ناتھ نے وزیراعلیٰ شیو راج کو خط لکھا ہے اورمطالبہ کیا ہے کہ اس وقت تمام طرح کی سہولت سے مندورں کے پجاری محروم ہیں۔خط میں انہوں نے مزید لکھا ہے کہ مدھیہ پردیش میں ہزاروں مندر اور خانقاہیں ہیں۔ یہ مندر اور خانقاہ (مٹھ)حکومت یا کسی ادارے کے ذریعہ یا کسی ٹرسٹ یا کمیٹی یا دوسرے نظام کے ذریعہ نہیں چلائے جاتے ہیں۔ ان مندروں میں روزانہ کی جانے والی پوجا کے لئے ضروری انتظامات اور وہاں رہنے کے انتظامات مندروں میں نذرانہ اور چندہ کے ذریعہ کئے جاتے ہیں۔
پجاریوں کے سامنے معاشی بحران:
کورونا وائرس کی وجہ سے لاک ڈاو¿ن پر عقیدت مندوں کوبھیمندروں کی زیارت کرنے سے منع کیا گیاہے ، اورمندوں میں رہنے والے پچاریوں کو نذرانہ اور عطیات نہیں مل رہے ہیں اور پجاریوں کو ہیکل کی پوجا کرنے اور اپنے ہی کنبہ کے رہنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ . مندروں میں اس وقت پوجا کرنا ممکن نہیںہے اور کاہنوں کے رہن سہن کا انتظام منظم طریقے سے نہیں ہوسکتا ہے ، لہذا حکومت کو مالی مدد فراہم کی جانی چاہئے۔کمل ناتھ نے اپنے خط میں وزیراعلیٰ شیوراج سنگھ سے درخواست کی ہے کہ اس مضمون پر فوری طور پر روشنی ڈالتے ہوئے ریاست کے ہر چھوٹے بڑے مٹھوںمیں عبادت کے لئے کم سے کم 5000 روپے ماہانہ اور پجاریوں کی زندگی بسر کرنے کے لئے 7500 روپئے ماہانہ کی رقم دی جائے۔ اگلے 3 ماہ کے لئے امداد قبول کرنے کا فیصلہ کریں اور اسے جلد سے جلد تقسیم کرنے کا فیصلہ کریں۔