حکومت راشن فراہم نہیں کریگی تو کانگریس سڑکوں پر نکلے گی:سریندر چودھری


بھوپال:11مئی(نیانظریہ بیورو)
مدھیہ پردیش کانگریس کے ورکنگ صدر سریندر چودھری نے لاک ڈاو¿ن میں غریبوں اور مسکینوں کو راشن فراہم کرنے کے حکومتی اعلانات پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا ہے کہ مدھیہ پردیش کے خوراک اور شہری فراہمی کے وزیر گووند سنگھ راجپوت نے اپنے آبائی ضلع میں اعلان کیا تھا غریبوں اورضرورت مندوں کوبغیر کسی راشن کارڈ کے راشن دیاجائے گا۔ لیکن اس پر کسی طرح کاکوئی عمل نہیں کیا جارہا ہے تو ریاست میں کیا صورتحال ہوگی۔ انہوں نے کہا ہے کہ اگر حکومت اپنے اعلامیہ تقسیم نہیں کرسکتی ہے تو وزیر گووند سنگھ راجپوت کو اناج تقسیم کرنے کا کوئی اعلان نہیں کرنا چاہئے تھا۔
کانگریس کے ورکنگ صدر سریندر چودھری نے مزید کہا ہے کہ ، اگر ریاستی حکومت ضرورت مندوں کو سرکاری راشن فراہم نہیں کرتی ہے تو کانگریس سڑکوں پر نکلنے پر مجبور ہوگی۔ قابل غور بات یہ ہے کہ شیوراج حکومت کی طرف سے لاک ڈاو¿ن کے حالات میں ، ریاست کے راشن کارڈ ہولڈروں اور غیر راشن کارڈ والوں کو راشن فراہم کرنے کا اعلان کیا گیا تھا۔ خوراک اور شہری فراہمی کے وزیر گووند سنگھ راجپوت نے بھی اپنے آبائی ضلع میں جائزے کے دوران غریبوں کو راشن کی فراہمی کے بارے میں بات کہی تھی ، لیکن ان کے آبائی ضلع کلکٹر نے راشن کارڈوں والے افراد کو بھی اناج تقسیم کرنے سے انکار کردیاہے۔
غورطلب ہے کہ مدھیہ پردیش کے فوڈ اینڈ سول سپلائی منسٹر گووند سنگھ راجپوت پر الزام عائد کرتے ہوئے ، سریندر چودھری نے یہ بھی کہا کہ ، 2 مئی کو وزیر خوراک نے ساگر میں گووند سنگھ راجپوت کی زیر صدارت ڈیزاسٹر مینجمنٹ گروپ اجلاس میں عوامی طور پر اعلان کیاتھا۔ اس دوران انہوں نے کہا تھا کہ کورونا وائرس اور لاک ڈاو¿ن کی وجہ سے ، غریب بے بس ، غریب خاندان جن کے پاس راشن کارڈ ہے ، اور جن کے پاس راشن کارڈ نہیں ہے ، تمام خاندانوں کو مفت راشن تقسیم کیا جائے گا ، لیکن ہفتے کے روز یعنی 9 مئی کو کینٹ بورڈ ساگر کی میٹنگ میں ساگر کلکٹر پریتی میتھل نائک نے دو ٹوک الفاظ میں کہا ہے کہ جن غریب ، لاچار خاندانوں کے پاس راشن کارڈ نہیں ہیں۔ ، ایسے کنبوں میں غلہ تقسیم نہیں کیا جائے گا اور حکومت کی جانب سے ایسے خاندانوں میں اناج تقسیم کرنے کی کوئی ہدایت نہیں ہے۔