بی جے پی حکومت مزدوروں کے ساتھ سوتیلا برتاؤ کر رہی ہے: اکھلیش

سماج وادی پارٹی(ایس پی)سربراہ اکھلیش یادو نے کہا ہے کہ کورونا بحران میں بے روزگاری کے ساتھ عدم تحفظ کی مار جھیل رہے مزدوروں کے تئیں بی جے پی حکومت کا رویہ بے حس اور غیر انسانی ہے۔
مسٹر یادو نے ہفتہ کو کہا کہ مزدوروں کے ساتھ دوئم درجے کے شہری کےجیسا برتاؤ کیا جارہا ہے کیونکہ وہ غریب، کمزور اور بے سہارا ہیں۔ امیروں کو بیرون ممالک سے واپس لانے کا ریکارڈ بنانے کی خواہش رکھنے والی بی جے پی حکومتیں اگرغریبوں کو بھی مفت میں واپس گھر پہنچانے کا ریکارڈ بنائیں تو کتنا اچھا ہو۔

انہوں نے کہا کہ سورت سے لوٹے اعظم گڑھ کے مزدوروں نے ایک درد بھری داستان بتائی ہے جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ریاست کی ڈبل انجن بی جے پی حکومت راحت کے ہوائی دعوے سے پیٹ بھررہی ہے۔ سورت سے لوٹے مزدوروں کے مطابق ان سے 800 روپئے لئے گئے اور کھانے۔پینے کو کچھ نہیں دیا گیا۔

مسٹر یادو نے کہا کہ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ بی جے پی حکومت نے ہندوستانی شہریت بھی امیر غریب میں تقسیم ہی لاک ڈاؤن میں راحت دینے کا انتظام کیا ہے۔ پہلے دور میں بیرون ممالک سے مفت ہوائی سفر سے لوگوں کو لایا گیا۔گھر واپسی کے لئے بےچین غریب مزدوروں کے ساتھ ٹرین اور بس کا کرائی دینے کے باجود بھی اچھا سلوک نہیں کیا گیا ۔کئی جگہ تو انہین پولیس کے ڈنڈے بھی کھانے پڑ ے ہیں۔

سابق وزیر اعلی نے کہا کہ بی جے پی سچائی کا سامنا کرنے سے ڈرتی ہے۔ سینکڑوں کوس چل کر آئے لاکھوں کی تعداد میں مزدوروں کا مستقبل انتظامیہ کی غیر دوراندیشی کی وجہ سے اندھیرے میں گم ہوگیا ہے۔ اس سچائی کو قبول کرنے میں بی جے پی اپنی شکست سمجھتی ہے۔ عوام کو شکست دینےکو بی جےپی اپنی بہادی سمجھتی ہے۔

ایس پی سربراہ نے کہا کہ نوٹ بندی اور جی ایس ٹی جیسے غلط فیصلوں کی طرح وزیر اعظم نے اچانک لاک ڈاؤن کا اعلان کر کے ملک میں بے گھر ہونے اور نقل مکانی کے جو حالات پیدا کئے ہیں اس سے ملک افراتفری اورعدم سیکورٹی کے جال میں بری طرح سے پھنس گیا ہے۔

مسٹر اکھلیش نے کہا کہ کتنے ہی مزدوروں کی جانیں چلی گئیں ۔بھوک ۔پیاس سے دم توڑنے کی بھی خبرین موصول ہورہی ہیں۔ بی جے پی امیروں کو راحت دینے میں لگی ہے۔ غریب سڑکوں وریل پٹریوں پر اپنی جان گنوا رہا ہے۔ بی جے پی کی ووٹ بینک کی سیاست کا یہ کھیل جمہوریت کو شرمندہ کرنے والاہے۔