لاک ڈاون میں رہیںہوشیار: موجودہ وقت میںسائبر کرائم میں ریکارڈہوا اضافہ ، جم کرہورہی آن لائن ٹھگی


بھوپال:9مئی(نیانظریہ بیورو)
لاک ڈاو¿ن کے دوران ، مدھیہ پردیش اور خاص طور پربھوپال میں سائبر کرائم کا گراف مسلسل آسمان کو چھو رہا ہے۔ عالم یہ ہے کہ بھوپال سائبر اور اسٹیٹ سائبر سیلز میں روزانہ نصف درجن سے زیادہ مقدمات درج کیے جاتے ہیں۔ خاص بات یہ ہے کہ سائبر سیل میں زیادہ سے زیادہ معاملات آن لائن دھوکہ دہی اور سوشل میڈیا پروفائلز کی ہیکنگ سے متعلق سامنے آئے ہیں۔
لاک ڈاو¿ن کو جعلسازوں اور ٹھگوں نے اپنے ہتھیار کے طور پر استعمال کیا ہے۔ وہ لوگ جو لوگوں کی مدد کے نام پر دھوکہ دے رہے ہیں ، روزانہ چار سے چھ ایسے معاملات اسٹیٹ سائبر سیل میں درج کیے جارہے ہیں۔ لہذا ریاستی سائبر سیل نے عام لوگوں کو ایڈوائزری جاری کی ہے۔ دھوکہ دہی کاشکاربننے پر www.cybercrime.gov.in درج ذیل سائٹ پر آن لائن شکایت کرنے کا مشورہ دیا جارہا ہے۔
اس طرح دیاجاتاہے واردات کوانجام:
٭کسی پالیسی یا انعام کا لالچ دے کر ، لوگ نیٹ ورک سے اپنے بینک کی تفصیلات لیتے ہیں اور کچھ منٹ میں ہی ان کے اکاو¿نٹ کی رقم نکال لی جاتی ہے۔
٭ فیس بک پروفائلز کو خصوصی طور پر سوشل میڈیا پر ہیک کیا جارہا ہے۔ اس کے بعد ، خود فرینڈ لسٹ کے رابطے کا میسج کرنے والا جعلساز ، کسی آفت میں پھنس جانے کا بہانہ کرکے لوگوں سے پیسے مانگتا ہے۔
٭آن لائن شاپنگ اور دیگر خدمات مثلا OLX او ایل ایکس ، فیس بک ، مارکیٹ پلیس ، انڈیا مارٹ اور دیگر خدمات پر خرید و فروخت کا جعلی ویب سائٹ کے ذریعہ دھوکہ کیا جارہا ہے۔
٭آن لائن رقم کی منتقلی کے لئے ، مروجہ یو پی آئی جیسے فون پے ، گوگل پے کو ہیک کراس رقم کو آن لائن ٹرانسفرکر دیا جاتاہے۔ یو پی آئی کی تفصیلات حاصل کرنے کے لئے ، ہیکرز جعلی روابط پر کلک کرکے معلومات لے رہے ہیں۔ یہ لنک صارف کو دوسرے صفحے پر لے جاتا ہے۔ جہاں گوگل ہیکس جیسے لنک کے ذریعے ہیکر کو معلومات مل جاتی ہیں۔ جس کے ساتھ یو پی آئی صارفین کے بینک اکاو¿نٹس سے براہ راست جڑ جاتی ہے ، اگر اس کا کوئی سیٹ ہیکر کے پاس جاتا ہے تو صارف کے بینک اکاو¿نٹ میں دستیاب رقم کو دھوکے سے اپنے اکاو¿نٹ میں ٹرانسفرکر دیا جاتا ہے۔
ریاستی سائبر کرائم نے ایڈوائزری کی جاری:
٭ سوشل میڈیا پروفائل کے مواد اور سندوں کی رازداری کی ترتیبات پر جاکر اسے نجی بنائیں ، تاکہ دوسرے لوگوں کے ذریعہ اس کا غلط استعمال نہ ہو۔
٭سوشل میڈیا پروفائلز کے پاس ورڈ کو آسان نہ رکھیں۔ مضبوط پاس ورڈ رکھیں ، لیٹر نمبر اور خصوصی امتزاج رکھیں تاکہ اس کا اندازہ نہیں کیا جاسکے۔
٭صرف ایک قابل اعتماد ای کامرس ویب سائٹ کے ذریعے خریداری کریں۔ کسی بھی نامعلوم ویب سائٹ اور موبائل ایپلیکیشن کو استعمال کرنے سے پہلے اسے چیک کریں۔
٭کسی نامعلوم لنک پر کلک نہ کریں۔ کسی بھی تیسری پارٹی کی ایپلی کیشن کو یہ لنک ارسال کیا جاسکتا ہے۔ جو آپ کے ساتھ دھوکہ ہو سکتا ہے۔
٭ای کامرس بلک ایس ایم ایس کے ذریعہ موصولہ معلومات پر اچانک یقین نہ کریں ،پہلے اسے چیک کریں۔
٭کسی نامعلوم شخص کو یوپی آئی، کریڈٹ ، ڈیبٹ کارڈ بینک اکاو¿نٹ سے متعلق معلومات شیئر نہ کریں۔