دیواس میں کورونا سے صحت یاب ہونے کی شرح میں مسلسل ہو رہا اضافہ


دیواس 08مئی (نیا نظریہ بیورو)دو تین دن کے سکون کے بعد ، کورونا نے ایک بار پھر اپنا رنگ دکھایا اور اس بار عام شہریوں کو چھوڑ کر خصوصی لوگوں پر اپنے اثرات ظاہر کئے۔ شہر میں اس وقت خوف و ہراس پھیل گیا جب ویٹ لفٹنگ میں سونے کا تمغہ حاصل کرنے وا لے دیواس کے مشہور بے ہوشی کے ڈاکٹر پرسنا کلکرنی کی کورونا رپورٹ مثبت آئی۔ ذرائع سے حاصل خبر کے مطابق ڈاکٹر کلکرنی جو مریضوں کو آپریشن سے قبل بے ہوش کرنے کا کام کرتے ہیں پچھلے کچھ دنوں سے مصیبت کی اس گھڑی میں بھی حکومت کے کندھے سے کندھا ملا کر دکھی اور پریشان مریضوں کے ساتھ کھڑے ہو کر اپنا فرض ادا کر رہے تھے اور بہت سے نرسنگ ہومز جا کر ڈاکٹروں کے ساتھ مل کر ایسا مریضوں کو بھی بے ہوش کر رہے تھے اور انہیں کامیاب علاج کر انے میں مدد فراہم کررہے تھے ۔ پچھلے 2-3 دنوں سے وہ کچھ تکلیف محسو س کر ر ہے تھے جس کے بعد ا نوں نے خود کے علاوہ اپنے اہل خانہ کی بھی جانچ کرائی ۔ تفتیش میں ، ڈاکٹر کلکرنی کی رپورٹ مثبت پا ئی گئی ، باقی لوگوں کی رپورٹ ابھی آنا باقی ہے ، احتیاط کے طور پر انہیں ا ملتاس اسپتال میں بھرتی کیا گیا ہے ۔ دیواس کا سرکاری اسپتال جس بدانتظامی کے تئیں بدنام ہوا تھا ، اس کے برعکس آج وہی سرکاری اسپتال ایک ایسے وقت میں کورونا مریضوں کے لئے امید کی کرن بنا ہوا ہے جب شہر کے بہت سے نجی اسپتال ابھی بھی بند ہیں ۔اب تک دیواس میں 29 مثبت مریضوں میں سے 13 مریض صحت یاب ہوکر اسپتال سے ڈسچارج کئے جا چکے ہیں ۔ ڈ اکٹر اتل بیدو ئی نے مزیدمعلومات دیتے ہوئے بتایا کہ اب تک 506 مریضوں کے نمونے لئے جاچکے ہیں ، ان میں سے 34 مثبت پا ئے گئے ہیں ، 2 مریضوں کو آج چھٹی دی جائے گی جب تیسرا نمونہ منفی آنے پر انہیں بھی ڈسچارج کیا جائے گا ۔ ان مریضوں میں ایک 3 سالہ معصوم بچہ بھی ہے جو کورونا کی جنگ جیت چکا ہے اور اپنے گھر محفوظ جا چکا ہے ۔ ڈاکٹر کلکرنی ، جو خود بھی اچھے جسم اور صحت سے مالا مال ہیں اور بہت سے نوجوانوں کیلئے مثال ہیں وہ کورونا کی اس جنگ میں بہترین جنگجو ثابت ہوں گے ، وہ اپنے کام کی جگہ پر واپس آئیں گے اور مظلوموں کی پہلے کی طرح جلد ہی مدد کر یں گے۔