اُجین میں لا ک ڈاﺅن و کرفیو کی خلاف ورزی

انتظامیہ اٹھا رہا سخت قدم ،گرفتار پارٹی نے ایک شخص کو کیا گرفتار
اُجین31 مارچ (نیا نظریہ بیورو)کورونا انفیکشن کی وجہ سے ، لاک ڈا¶ن کے دوران کلکٹر ششانک مشرا کی جانب سے کرفیو نافذ کر دیا گیا ہے ۔ اس کے بعد سڑکوں پر ہر قسم کی گاڑیوں کی آمدورفت پر مکمل طور پر پابندی عائد کرنے کے حکم کے بعد بھی لوگ اس حکم کی خلاف ورزی کر رہے ہیں۔ محکمہ صحت کی جانب سے 10 سال سے کم عمر کے بچوں اور 60 سال سے تجاوز کر چکے بزرگوں کو گھروں میں ہی رہنے کی ہدایت دی گئی ہے لیکن لوگ کسی بھی حکم یا ہدایت پر عمل کرنے کو تیار نہیں۔ صبح ہوتے ہی ہرسدھی چوراہے و دیگر چوراہوں پر لوگ بلا وجہ گاڑیوں سے اور پیدل گھومتے نظر آئے ۔ انتظامیہ کی جانب سے مائیک سے لوگوں کو اپنے گھروں میں رہنے کیلئے مسلسل اپیل کی جا رہی ہے لیکن لوگ اس حکم کی کھلے عام خلاف ورزی کر رہے ہیں ۔اس کے علاوہ انتظامیہ نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ ضروری سامان محلے کی نزدیکی دکانوں سے ہی خریدیں ، گاڑیوں پر سوار ہو کر یا پیدل سڑکوں پر نہ گھومیں۔دولت گنج و شہر کے دیگر چوراہوں پر تعینات پولیس اافسران نے گاڑیوں سے گھوم رہے لوگوں سے گھومنے کی وجہ پوچھی لیکن و ہ لوگ کوئی بھی جواب دینے سے قاصر رہے ۔اس پر پولیس افسران نے ایسے لوگوں پر کارروائی کی ۔وائرلیس سیٹ پر ، سینئر عہدیداروں کی جانب سے مستقل ہدایات موصول ہو رہی تھیں کہ دو پہیوں پر جانے والے لوگوں کو روک کر چیک کیا جائے ۔پولیس اہلکاروں نے سختی دکھائی اور ایک درجن ڈرائیوروں کو روک لیا اور ان کے گاڑیوں کی چابیاں اپنے پاس رکھ لیں۔
گرفتاری پارٹی نے ہدایت دی ، ایک کو پکڑا
لاک ڈا¶ن کے دورا ن گاڑیوں سے بلا وجہ گھومنے والوں کے خلاف پولیس کی جانب سے سخت سے سخت کارروائی کی جا رہی ہے ۔اسی زمرے میں صبح 8 بجے سے پولیس کی گرفتاری پارٹی شہر کے مختلف راستوں پر نکلی۔ پولیس گاڑی میں مائیک بھی لگے ہوئے تھے جن سے مسلسل اعلان میں لوگوں کو قوانین پر عمل کرنے کی وارننگ بھی دی جا رہی ہے ، جو لوگ قوانین کی خلاف ورزی کر رہے ہیں ان کی دھر پکڑ بھی صبح سے شروع کر دی گئی۔ گرفتار پارٹی کے پولیس اہلکاروں نے ڈھاباروڈ ، قمری مارگ وغیرہ علاقوں میں دکانوں کے باہرلوگوں سے سوشل ڈسٹنٹ برقرار رکھنے کی بھی اپیل کی ۔ایک شخص کو خلاف ورزی کرتے ہوئے ایک شخص کوگرفتار کیا ۔