بدانتظامی کاحال: خصوصی ٹرین سے بھوپال پہنچے مزدوروں کوبارہ گھنٹے تک کھانانہیں ملا


بھوپال:7مئی(نیانظریہ بیورو)
لاک ڈاو¿ن کی وجہ سے مدھیہ پردیش کے مزدور مختلف ریاستوں میں پھنس ہوئے ہیں ، جن کی آمد مسلسل جاری ہے۔ جمعرات کے روز مزدوروں کو لے جانے والی تیسری ٹرین راجدھانی بھوپال کے حبیب گنج اسٹیشن پہنچی۔ یہ ٹرین مہاراشٹر کے پنویل سے چلائی گئی تھی۔ اس ٹرین میں 1193 مزدور لائے گئے ہیں۔ جس میں پہلے تمام مسافروں کی اسکریننگ کی گئی ، جس کے بعد سب کو مختلف شہروں کے مطابق بسوں کے ذریعے روانہ کیا گیا ۔
ٹرین میں کھانے پینے کا کوئی انتظام نہیں:
بھوپال آنے میں مزدوروں کو بہت سی مشکلات کا سامنا کرنا پڑاہے ۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ، مسافروں نے بتایا کہ ٹرین میں سفر کرتے 12 گھنٹے لگے۔ اس دوران انہیں راستے میں نہ تو کھانا دیا گیا نہ ہی پانی دیا گیا۔ جس کی وجہ سے انہیں اس شدید گرمی میں کافی پریشانی کا سامنا کرنا پڑا۔ ٹرین سے اترنے کے بعد بھوپال انتظامیہ نے مسافروں کے کھانے کا انتظام کیا۔وہیں جن مسافروں کویہاں لایا گیا ہے ان میں مزید کچھ اضلاع کے مزدور شامل ہیں جن میں مرینا ، شیو پور ، بیتول ، ہوشنگ آباد ، آگر مالوا ، چھترپور ، انو پ پور ، شہڈول ، امریا ، ریوا ، سدھی ، باروانی ، برہان پور ، دھار، جھابوا شامل ہیں۔ وہ سب مزدوری کے لئے مہاراشٹرا گئے تھے۔ اس دوران تمام مزدوروںکو بہت ساری پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑا ہے۔غورطلب ہے کہ بروزجمعرات مزدوروں کو لےکر تیسری ٹرین بھوپال کے حبیب گنج اسٹیشن پہنچی۔ اس ٹرین میں 1193 مزدورسوارتھے۔ اسی دوران ، مزدوروںنے بتایا کہ انہیں سارا راستہ کھانے پینے کوکچھ بھی نہیں دیا گیا۔جس کی وجہ سے انہیں اس سخت گرمی میں کافی پریشانی کا سامنا کرنا پڑا۔