گاوں میں رہنے والے بھی ہیں ضرورت مندوں کی بھی فکرکی جانی چاہئے: منظربھوپالی


بھوپال:31مارچ (نیانظریہ بیورو)مشکل وقت میں انسانیت کی تقاضوں پر نظرین اٹھنا شروع ہوجاتی ہے۔ شہری علاقوں میں لاک ڈاو¿ن کی حالت میں لوگوں سے مدد لینا شروع ہوگیا ہے۔ سرکاری مدد کے دروازے بھی کھلے ہیں۔ لیکن یہ مسئلہ دیہی اور پسماندہ علاقوں میں رہنے والے لوگوں میں ہے۔ نہ ہی ان تک تنظیمیں اور نہ ہی سرکاری لوگ کسانوں اور مزدوروں تک مدد پہنچا رہے ہیں۔اس لئے ان کی مددنہیں ہوپارہی ہے۔اس پس منظرمیں مشہور شاعر منظر بھوپالی نے دیہی علاقوں میں پھنسے لوگوں کی فکر کرتے ہوئے حکومت سے اس سمت میں کوشش کرنے کامطالبہ کیاہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ روزانہ کمانے والے زرعی مزدوروں کی صورتحال دن بدن خراب ہوتی جارہی ہے۔
پوری فصل غریبوں کے نام:
منظربھوپالی نے مزید بتایا کہ وہ اپنی تیس ایکڑ اراضی پر فارم ہاو¿س پر پیدا ہونے والی پوری فصل قریبی دیہی اور ضرورت مند لوگوں میں مفت تقسیم کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس کے فارم ہاو¿س کے آس پاس بہت سے غریب خاندان رہتے ہیں ، جن کا کام اس وقت مکمل طور پر تعطل کا شکار ہے۔ منظر نے کہا کہ ہر مذہب نے اس بات کو یقینی بنایا ہے کہ پڑوسی کا خیال رکھنا چاہئے۔ انسانیت سے گزارش ہے کہ مشکل وقت میں ضرورت مندوں کی مدد کریں۔ انہوں نے بتایا کہ وہ اپنی فصل کا بندوبست کرنے میں مصروف ہیں۔ اس کے کٹ جانے کے بعد اسے ضرورت مندوں کو مفت تقسیم کیا جائے گا۔