سیاسی کاموں سے ہٹ کرمحکمہ صحت کے ملازمین پرتوجہ دے حکومت:عارف مسعود


بھوپال:6مئی(نیانظریہ بیورو)
اس وقت پوری دنیا کے ساتھ ساتھ ہمارا صوبہ بھی مہاماری کے دور سے گزر رہا ہے ، ایسے میں ریاست کی بی جے پی حکومت کو اسکیموں کے نام پرسیاست کرنے کی اوچھی حرکت ہے۔
اس کے ارکان اسمبلی بچکانہ بیانات کے ذریعے نفرت پھیلانے سے باز نہیں آرہے ہیں۔ جب کہ صحت کی خدمات ٹوٹنا شروع ہوگئی ہیں۔ اگر ریاست میں موجود طبی سہولیات کا صحیح استعمال کیا جائے تو پھر اس مشکل صورتحال سے لڑنا آسان ہوجائے گا۔
راجدھانی کے مرکزی اسمبلی حلقے سے کانگریس رکن اسمبلی عارف مسعود نے بروزبدھ پریس کانفرنس کے دوران تشویش کا اظہار کیا اورکہ صرف شہر اور ریاست میں موجود طبی سہولیات کا استعمال نہ کرکے صرف کچھ منتخب اسپتالوں کے بھروسےسنگین بیماروں کو چھوڑ دیا ہے۔ انہوں نے سرکاری محکمہ صحت کے عملے کی خراب صحت خدمات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ نہ تو لوگوں کو بروقت ایمبولینس مل رہی ہے اور نہ ہی مناسب علاج۔ جانچ وقت پر نہیں ہو رہی ہیں اور نہ ہی اس کی رپورٹس مقررہ مدت میں آرہی ہیں۔ مسعود نے کہا کہ اگر نجی اسپتالوں کو کام شروع کرنے کی اجازت دی جاتی تو ، لوگوں کے لئے کورونا کے علاوہ دیگر بیماریوں سے علاج کروانا آسان ہوجائے گا۔
شیوراج منصوبوں میں رقم کمانے میں مصروف:
ایم ایل اے عارف مسعود نے الزام لگایا کہ جب ریاست وبائی امراض سے دوچار ہے ، وزیر اعلی شیوراج سنگھ چوہان سرکاری اسکیموں سے سیاسی فوائد حاصل کرنے میں پریشان ہیں۔ مسعود نے مزیدکہا کہ غریب افراد کو راشن فراہم کرنے اور ان کے کھاتے میں رقم بھیجنے سے لے کر تمام معاملات عوام کے لئے پریشانی ثابت ہوئے ہیں۔ مزدوروں ، طلباءاور دیگر کو گھر لانے کے نام پر بھی منافع کمایا جارہا ہے۔ ان تمام معاملات میں ، حکومت خودہی اعلان کر رہی ہے اور خودکی ہی پیٹھ تھپتھپا رہی ہے۔
باکس
لاک ڈاو¿ن میں سختی سے ہوعمل:
ایم ایل اے عارف مسعود نے لاک ڈاو¿ن کو توڑنے والوں کے خلاف پولیس کے وحشیانہ رویے پر مستقل ناراضگی کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں پر اس طرح لاٹھی چارج کے بجائے یہ انتظام کیا جانا چاہئے کہ ہر چوراہے کے چیکنگ پوائنٹ پر میڈیکل ٹیم بٹھایا جائے۔ جو گھر سے باہر نکلنے والے ہر شخص کی جانچ کرتا رہے۔ اس سے ان لوگوں پر خوف طاری ہوگا جوغیرضروری طورپرگھرسے باہر نکل رہے ہیں۔