بھوپال میں پھنسے چھتیس گڑھ کے مزدوروں کو جلد ہی بھیجا جائے انکی ریاست: پی سی شرما


بھوپال:6مئی(نیانظریہ بیورو)
اس وقت پورا ملک کورونا وائرس سے لڑنے میں مصروف ہے ، مرکزی حکومت نے پورے ملک میں لاک ڈاو¿ن کیا ہوا ہے ، لیکن اس لاک ڈاو¿ن میں مزدور طبقہ سب سے زیادہ پریشان ہو رہا ہے۔ لاک ڈاو¿ن کی وجہ سے مزدوروں کے سامنے معاش کا بحران ہے۔ مدھیہ پردیش کے بہت سے مزدور دیگر ریاستوں میں بھی پھنسے ہیں ، حکومت انہیں واپس لانے کے لئے کوشاں ہے۔ وہیں چھتیس گڑھ کے 55 مزدور بھوپال کے ڈپو چوراہے میں واقع جلیشور مندر کے قریب پھنسے ہوئے ہیں۔میڈیا نے بھی اس بارے میں خبر ظاہر کی تھی ، اس خبر کے ظاہر ہونے کے بعد علاقائی ایم ایل اے اور سابق وزیر پی سی شرما مزدوروں سے ملنے آئے تھے اور ان کی دیکھ بھال بھی کی تھی۔
وہیںپی سی شرما نے چھتیس گڑھ کے وزیر صحت ٹی ایس سنگھ دیو سے فون پر اس بارے میںبات کی تھی ، جس میں چھتیس گڑھ حکومت کے ذریعہ انہیں ان کے گھر واپس لانے کے مناسب انتظامات پر تبادلہ خیال کیا گیا تھا۔ اسی دوران ، ٹی ایس سنگھ دیوی نے سابق وزیر پی سی شرما کو یقین دہانی کرائی تھی کہ وہ جلد ہی مزدوروں کو فون کریں گے اورانہیں وطن واپس لائیں گے۔
غورطلب ہے کہ ان مزدوروں نے کچھ دن قبل گھر جانے کے لئے ہنگامہ بھی کردیا تھا۔ تب بھی اسے جلد ہی بھیجنے کی یقین دہانی کرائی گئی تھی۔ اب دیکھنا ہے کہ انہیں کب تک گھر بھجوایا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ ان مزدوروں کی طرح لاکھوں مزدور ملک کے بیشتر حصوں میں پھنسے ہوئے ہیں ، جنہیں وطن واپس لانے کے لئے متعلقہ حکومتیں ہدایات جاری کررہی ہیں۔