سی ایم ایچ او پانچ دن بعدپہنچے اپنے گھر، باہرسے ہی لی خاندان کی خیریت


بھوپال:31مارچ(نیانظریہ بیورو) کورونا وائرس کے انفیکشن کو روکنے کے لئے ، نہ صرف ملک میں بلکہ ریاست اور ضلع سطح پر بھی کورونا وائرس کے پھیلاو¿ کو روکنے کے لئے بہت ساری کوششیں کی جارہی ہیں۔اس صورتحال میں محکمہ صحت کے افسران اور ملازمین کو کام کرنے کے لئے زیادہ سے زیادہ وقت دینا پڑتا ہے ، جس کی وجہ سے وہ اپنے رشتہ داروں سے بھی نہیں مل پاتے ہیں۔ نیز کورونا وائرس کی روک تھام کے لئے محکمہ صحت مریضوں کے قریب ہی رہتی ہے ، جس کی وجہ سے انہیں بھی انفیکشن کا خطرہ رہتا ہے۔ اس صورتحال میں انفیکشن اس کے کنبے تک نہیں پہنچے ،لہذا ڈاکٹر اور دیگر ملازمین اپنے کنبہ سے نہیں مل رہے ہیں۔وہیں جب بھوپال ضلع کے چیف میڈیکل اینڈ ہیلتھ آفیسر ڈاکٹر سدھیر ڈہریا کو اپنی ڈیوٹی سے تھوڑی فرصت ملی تو وہ 5 دن بعد اپنے اہل خانہ سے ملنے گئے۔ اس دوران ، ڈاکٹر دہریہ گھر کے باہر بیٹھ گئے اور اپنے اہل خانہ سے بات کیتاکہ انفیکشن ان تک نہیں پھیل سکے ، لہذا سکیورٹی کے تمامپہلو کو اپناتے ہوئے وہ دور دراز سے ہی اپنے کنبے کی خیریت دریافت کی۔غورطلب ہے کہ سدھیر ڈہریا کی ڈیوٹی کورونا وائرس کے لئے کنٹرول روم اور الگ تھلگ وارڈ میں ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ ، چیف میڈیکل اینڈ ہیلتھ آفیسر ہونے کے ناطے ، اس وقت ان پر سب سے زیادہ ذمہ داری عائد ہے ، جس کی وجہ سے ڈاکٹر کو اپنے اہل خانہ سے ملنے کا وقت نہیں مل رہا ہے۔