پرائیویٹ اسپتالوں کی من مانی پر افسران کریں سخت کا رروائی:آبی وسائل وزیر جناب سلاوٹ


اندور 03مئی (نیا نظریہ بیورو) کورونا کے معاملے میں ریڈژون میں شامل اندور کو لے کر ہفتہ کے روز ریذیڈنسی کوٹھی میں ایک میٹنگ منعقد ہوئی۔ آبی وسائل کے وزیر جناب تلسی سلاوٹ نے کہا کہ پرائیویٹ اسپتالوں میں مریضوں کے بھرتی سے ڈسچارج ہونے تک میں لاپرواہی کی جا رہی ہے۔ بہت سے مریض طویل عرصے سے بھرتی ہیں۔ ان کو نظرانداز کیا جارہا ہے۔ افسران پرائیویٹ اسپتالوں پر نگاہ رکھیں ، انھیں من مانی نہ کرنے دیں۔ ضرورت پڑنے پر سخت کارروائی کریں۔ کلکٹرجناب منیش سنگھ نے بھی کچھ کارروائی سے آگاہ بھی کیا۔ ممبر پارلیمنٹ شنکر للوانی نے کہا کہ حاملہ خواتین کی ڈلیوری اور کینسر جیسی سنگین بیماریوں میں کسی قسم کی کوتاہی نہ برتی جائے۔
مکان مالک کرایہ پر رہ رہے طلباءسے کرایہ نہ لیں
وزیر جناب تلسی سلاوٹ نے گاﺅں ،کسانوں اور سماجی تحفظ کی پنشن سے مستفید افراد پر بھی توجہ دینے کو کہا۔ انہوں نے کہا کہ بیوہ اور بزرگ افراد تک ان کی پنشن کیسے پہنچیں اس کے لئے مناسب اقدامات کرنے چائیے ۔ انہوں نے کہا کہ طلباءکی ایک بڑی تعداد اندور میں مقیم ہے ۔
مکان مالک اور ہاسٹل چلانے والے ان سے کرایہ وصول نہ کریں۔ کلکٹر نے بتایا کہ ضلع انتظامیہ نے دفعہ 144 کے تحت طالب علموں سے کرایہ وصول نہ کرنے سے متعلق ہدایات پہلے ہی جاری کردی ہیں۔ ڈویژنل کمشنر جناب آکاش ترپاٹھی ، آئی جی جناب وویک شرما ، ڈی آئی جی جناب ہری نارائن چاری مشرا اور میونسپل کارپوریشن کمشنر جناب آشیش سنگھ اس میٹنگ میں موجود تھے۔ شہر کانگریس کمیٹی نے من مانی کرنے والے پرائیویٹ اسپتالوں کا لائسنس منسوخ کرنے کو کہا ہے۔ شہر کانگریس صدر جناب ونئے باکلیوال نے کلکٹرجناب منیش سنگھ کو فون پر بتایا کہ پرائیویٹ اسپتال مریضوں کو داخل کرنے کے بعدانہیں لاکھوں کا بل دیتے ہیں۔ متاثرین کی جانب سے مستقل فون آرہے ہیں کہ پرائیویٹ اسپتال میں مہنگا علاج کیا جارہا ہے۔ من مانی بل بنائے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر من مانی نہیں رکی تو کانگریس احتجاج کرے گی۔ ڈویژنل انچارج وزیر سلاوٹ نے ڈویژنل کمشنرجناب آکاش ترپاٹھی کو ہدایت دی کہ وہ کورونا کے مریضوں کو ایلوپیتھی کے ساتھ ہومیوپیتھک دوائیں دیں۔ یہ مسئلہ وزارت آیوش وزارت کے سائنسی مشاورتی بورڈ کے ممبر ڈاکٹر اے کے دو یدی نے ریذیڈنسی کوٹھی میں ایک اجلاس میں اٹھایا۔ اجلاس میں ایم جی ایم میڈیکل کالج کی ڈین ڈاکٹر جیوتی بندل نے بھی شرکت کی۔