حمیدیہ اسپتال کے آوٹ سورس ملازمین نے منیجر پر عدم توجہی کالگایا الزام


بھوپال:2مئی(نیانظریہ بیورو)
راجدھانی میں جہاں کورونا وائرس کا خطرہ مسلسل بڑھتا جارہا ہے ، وہیں شہر کے اسپتالوں کے ملازمین اپنے منیجروں پر عدم توجہی کا الزام عائد کرتے ہوئے دیکھے جاتے ہیں۔ اس واقعہ میں ، حمیدیہ اسپتال کے آو¿ٹ سورس ملازمین نے بھی اپنے منیجر پر غفلت اور بدسلوکی کا الزام عائد کرتے ہوئے احتجاج کیاہے۔ملازمین کاکہنا ہے کہ مناسب انتظامات نہ کیے جانے پر حمیدیہ اسپتال میں آو¿ٹ سورس کمپنی کے گارڈ سمیت وارڈ بوائے ، آو¿ٹ سورس ملازمین نے مظاہرہ کیا۔ آو¿ٹ سورس ملازمین کا الزام ہے کہ کورونا وائرس وارڈ ، وارڈ بوائے ، گارڈ اور دیگر ملازمین میں ڈیوٹی کرنے والے ملازمین کو کھانا ، پانی ، نمکین بھی نہیں مل رہا ہے۔ملازمین کامزیدکہنا ہے کہ جہاں رہائش کا انتظام کیا گیا ہے ، وہاں صرف گدے ڈالے گئے ہیں۔ سونے کے لئے بیڈ شیٹ تک نہیں دی گئی ہے۔ جب کمپنی کے منیجر سوجیت سے بات کی گئی تو اس نے اس سے کہا کہ وہ نوکری چھوڑ کر گھر چلے جائےں۔اس بات سے تمام ملازمین مشتعل ہوگئے اور منیجرکے خلاف مظاہرہ کرنا شروع کردیا۔ اسی دوران ، کمپنی کے ملازمین اور منیجر نے ایک دوسرے پر حملہ کرنے کا الزام بھی عائد کیا ہے۔غورطلب ہے کہ اس سے قبل بھی بھوپال میں ڈسٹرکٹ اسپتال اور لال سنگھ گورنمنٹ گیس ریلیف اسپتال کے ملازمین نے اپنے اسپتال انتظامیہ پر غفلت کا الزام عائد کیا تھا۔ لیکن اب تک محکمہ صحت کی طرف سے کوئی ٹھوس اقدام نہیں کیا گیا ہے اور نہ ہی طبی عملے کی حفاظت کے لئے میڈیکل اسٹاف کی ذمہ داریاں عائد کی جا رہی ہیں ۔جبکہ سٹی اسپتال کے ملازمین مسلسل لاپرواہی کا الزام عائد کررہے ہیں۔