پرینکا گاندھی نے مودی حکومت پر اٹھائی انگلی، کہا ’پی ایم کیئر فنڈ کے لیے ہو رہی وصولی‘

پی ایم کیئر فنڈ میں 100-100 روپے وصولنے پر کانگریس کی قومی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی نے مرکزی حکومت پر حملہ کیا ہے۔ پرینکا گاندھی نے کہا ہے کہ پی ایم کیئر کا سرکاری آڈٹ ہونا چاہیے۔ انھوں نے ملک کے بڑے ڈیفالٹروں کے 68 ہزار کروڑ روپے معاف کیے جانے پر بھی انگلی اٹھائی ہے۔ انھوں نے کہا کہ کورونا بحران کے وقت عوام کے سامنے شفافیت ضروری ہے۔
دراصل بھدوہی کے ضلع مجسٹریٹ نےا یک خط جاری کر پی ایم کیئر فنڈ میں عطیہ کروانے کا دلچسپ طریقہ نکالا ہے۔ بھدوہی ضلع مجسٹریٹ راجندر پرساد نے ضلع کے سبھی نائب ضلع مجسٹریٹ، ضلع ڈیولپمنٹ افسر سمیت 9 افسروں کو 1 لاکھ 40 ہزار آروگیہ سیتو ایپ ضلعی باشندوں سے ڈاؤن لوڈ کرانے اور انھیں 100-100 روپے پی ایم کیئر فنڈ میں تعاون کرنے کے لیے کہا ہے۔

پرینکا گاندھی نے پی ایم کیئر فنڈ کے لیے لوگوں سے وصولی کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے سرکاری آڈٹ کا مطالبہ کیا ہے۔ انھوں نے ٹوئٹ کیا ہے کہ “ایک مشورہ: جب عوام پریشان حال ہیں۔ راشن، پانی، نقدی کی قلت ہے اور سرکاری محکمہ سب سے 100-100 روپے پی ایم کیئر فنڈ کے لیے وصول کر رہا ہے۔ تب ہر نظریہ سے مناسب رہے گا کہ پی ایم کیئر کی سرکاری آڈٹ ہو۔”

پرینکا گاندھی نے مزید لکھا کہ ملک سے تقریباً بھاگ چکے بینک چوروں کے 68 ہزار کروڑ معاف ہوئے، اس کا حساب ہونا چاہیے۔ بحران کے وقت عوام کے سامنے شفافیت اہم ہے۔ اس میں دونوں عوام اور حکومت کی بھلائی ہے۔ پرینکا گاندھی نے اپنے ٹوئٹ کے ساتھ اتر پردیش کے بھدوہی ضلع مجسٹریٹ کا حکم نامہ بھی چسپاں کیا ہے۔ اس حکم میں انھوں نے آروگیہ سیتو ایپ کو ڈاؤن لوڈ کر کے پی ایم کیئر فنڈ میں 100 روپے تعاون کرنے کو کہا ہے۔ اس حکم میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ ایپ ڈاؤن لوڈ کرا کر فنڈ میں 100 روپے دے کر ضلع مجسٹریٹ کو مطلع کرایا جائے۔ علاوہ ازیں حکم صادر کیا گیا ہے کہ اس کام میں لاپروائی ہوئی تو متعلقہ لوگوں کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔