صرفبھوکےپیاسےرہنےکانامروزہنہیں

ڈاکٹرمحمدنجیبقاسمیسنبھلی
(www.najeebqasmi.com)

لاکڈاؤنکیوجہسےماہِرمضانمیںبھیہماریمساجدنمازیوںسےخالیہیں۔ مگردنیاویمصروفیاتکیکمیکےباعثہمگھروںمیںرہکربھیاللہتعالیٰکیزیادہسےزیادہعبادتکرکےاپنےخالقکوراضیکرسکتےہیں۔ رمضانکیسبسےاہمعبادتروزہرکھناہے،لہذاکسیشرعیعذرکےبغیرہرگزروزہنہچھوڑیں۔ ہمارےنبیاکرمﷺنہصرفماہِرمضانکےروزوںکااہتمامفرماتےتھے،بلکہآپﷺرمضانکےعلاوہبھیکثرتسےروزےرکھتےتھےکیونکہروزےکےبےشمارفوائدہیں۔ سبسےاہمباتیہہےکہاسماہمبارکمیںہمارےاندرتبدیلییعنینیکیوںکیطرفرجحاناوربرائیوںسےدوریپیداہوتیہےاوراسیتبدیلیکارمضانکےبعدبھیباقیرکھناضروریہے۔
حضرتابوہریرہرضیاللہعنہسےروایتہےکہحضوراکرمﷺنےارشادفرمایاکہبہتسےروزہرکھنےوالےایسےہیںکہانکوروزہکےثمراتمیںبجزبھوکارہنےکےکچھبھیحاصلنہیں،اوربہتسےشببیدارایسےہیںکہانکوراتکےجاگنے (کیمشقت) کےسواکچھبھینہیںملتا۔ (ابنماجہ،نسائی) معلومہواکہصرفبھوکاپیاسارہناروزےکےبنیادیمقاصدکوحاصلکرنےکےلیےکافینہیںہے۔ آئیےقرآنوحدیثکیروشنیمیںروزےکےچندبنیادیمقاصدکوسمجھیںتاکہاُنمقاصدکوسامنےرکھکرماہرمضانکےروزےرکھےجائیں۔
تقوی:اللہتعالیٰقرآنکریممیںارشادفرماتاہے: اےایمانوالو! تمپرروزہفرضکیاگیاجسطرحتمسےپہلیامتوںپرفرضکیاگیاتھاتاکہتممتقیبنجاؤ۔ (سورۃالبقرہ183) قرآنکریمکےاساعلانکےمطابقروزہکیفرضیتکابنیادیمقصدلوگوںکیزندگیمیںتقویٰپیداکرناہے۔ تقویٰاصلمیںاللہتعالیٰسےخوفورجاءکےساتھحضوراکرمﷺکےطریقہکےمطابقممنوعاتسےبچنےاوراوامرپرعملکرنےکانامہے۔ روزہسےخواہشاتکوقابومیںرکھنےکاملکہپیداہوتاہےاوریہیتقویٰیعنیاللہکےخوفکیبنیادہے۔ روزہکےذریعہہمعبادات،معاملات،اخلاقیاتاورمعاشرتغرضیکہزندگیکےہرشعبہمیںاپنےخالق،مالکورازقکائناتکےحکمکےمطابقزندگیگزارنےوالےبنسکتےہیں۔ اگرہمروزہکےاساہممقصدکوسمجھیںاورجوقوتاورطاقتروزہدیتاہےاسکولینےکےلئےتیارہوںاورروزہکیمددسےاپنےاندرخوفخدااوراطاعتامرکیصفتکونشوونمادینےکیکوششکریںتوماہرمضانہممیںاتناتقویٰپیداکرسکتاہےکہصرفرمضانہیمیںنہیںبلکہاسکےبعدبھیگیارہمہینوںمیںزندگیکیشاہراہپرخاردارجھاڑیوںسےاپنےدامنکوبچاتےہوئےچلسکیں۔ اللہتعالیٰ ہمسبکوروزہکےاساہممقصدکواپنیزندگیمیںلانےوالابنائے۔ آمین۔
گناہوںسےمغفرتحضوراکرمﷺنےارشادفرمایا: جسنےایمانکےساتھثوابکینیتسےیعنیخالصۃًاللہکیخوشنودیحاصلکرنےکےلئےروزہرکھااسکےگزشتہتمام (چھوٹے) گناہمعاففرمادئےجاتےہیں۔ (بخاریومسلم) اسیطرححضوراکرمﷺکافرمانہے:جوایمانکےساتھثوابکینیتسےیعنیریا،شہرتاوردکھاوےکےلئےنہیںبلکہصرفاورصرفاللہکیرضاکےلئےراتمیںاللہکیعبادتکےلئےکھڑاہوایعنینمازتراویحاورتہجدپڑھیتواسکےگزشتہتمام (چھوٹے) گناہمعافکردئےجاتےہیں۔ (بخاریومسلم) اسیطرححضوراکرمﷺکافرمانہے: جوشحضشبقدرمیںایمانکےساتھاورثوابکینیتسےعبادتکےلئےکھڑاہوایعنینمازتراویحوتہجدپڑھی،قرآنکیتلاوتفرمائیاوراللہکاذکرکیاتواسکےگزشتہتمام (چھوٹے) گناہمعافکردئےجاتےہیں۔ (بخاریومسلم)
ایکمرتبہحضوراکرمﷺنےصحابہکرامسےارشادفرمایاکہمنبرکےقریبہوجاؤ،صحابہکرامقریبہوگئے۔ جبحضوراکرمﷺنےمنبرکےپہلےدرجہپرقدممبارکرکھاتوفرمایاآمین۔ جبدوسرےدرجہپرقدممبارکرکھاتوفرمایاآمین۔ جبتیسرےدرجہپرقدممبارکرکھاتوفرمایاآمین۔ جبآپﷺخطبہسےفارغہوکرنیچےاترےتوصحابہکرامنےعرضکیاکہہمنےآجآپسےمنبرپرچڑھتےہوئےایسیباتسنیجوپہلےکبھینہیںسنیتھی۔ آپﷺنےارشادفرمایا: اسوقتحضرتجبرئیلعلیہالسلاممیرےسامنےآئےتھے۔ جبپہلےدرجہپرمیںنےقدمرکھاتوانہوںنےکہاہلاکہووہشخصجسنےرمضانکامبارکمہینہپایاپھربھیاسکیمغفرتنہہوسکی،میںنےکہاآمین۔ پھرجبدوسرےدرجہپرچڑھاتوانہوںنےکہاہلاکہووہشخصجسکےسامنےآپﷺکاذکرمبارکہواوروہدرودنہبھیجے،میںنےکہاآمین۔ جبمیںتیسرےدرجہپرچڑھاتوانہوںنےکہاہلاکہووہشخصجسکےسامنےاسکےوالدینیاانمیںسےکوئیایکبڑھاپےکوپہونچےاوروہاسکوجنتمیںداخلنہکراسکیں،میںنےکہاآمین۔ (بخاری،صحیحابنحبان،مسندحاکم،ترمذی،بیہقی) غرضیکہکسقدرفکراورافسوسکیباتہےکہماہمبارککےقیمتیاوقاتبھیغفلتاورمعاصیمیںگزاردئےجائیںجسسےسابقہگناہوںکیمغفرتبھینہہوسکی۔ لہذاہمیںرمضانکےایکایکلمحہکیحفاظتکرنیچاہئےتاکہایسانہہوکہہمحضرتجبرئیلعلیہالسلاماورحضوراکرمﷺکیاسدعاکےتحتداخلہوجائیں۔
حضوراکرمﷺنےارشادفرمایاکہبہتسےروزہرکھنےوالےایسےہیںکہانکوروزہکےثمراتمیںبجزبھوکارہنےکےکچھبھیحاصلنہیںہوتااوربہتسےشببیدارایسےہیںکہانکوراتکےجاگنےکےسواکچھبھینہیںملتا۔ (سننابنماجہ) یعنیروزہرکھنےکےباوجوددوسروںکیغیبتکرتےرہتےہیںیاگناہوںسےنہیںبچتےیاحراممالسےافطارکرتےہیں۔ لہذاہمیںہرہرعملخیرکیقبولیتکیفکرکرنیچاہئے۔ حضوراکرمﷺنےارشادفرمایاکہرمضانکیآخریراتمیںروزہداروںکیمغفرتکردیجاتیہے۔ صحابہکرامنےعرضکیاکہکیایہشبِمغفرتشبِقدرہیتونہیںہے؟آپﷺنےفرمایانہیںبلکہدستوریہہےکہمزدورکاکامختمہوتےہیاسےمزدوریدےدیجاتیہے۔ معلومہواکہہمیںعیدکیراتمیںبھیاعمالصالحہکاسلسلہجاریرکھناچاہئےتاکہرمضانمیںکیگئیعبادتوںکابھرپوراجروثوابملسکے۔
قربالہی:روزہدارکواللہتعالیٰکاخاصقربحاصلہوتاہے۔ روزہکےمتعلقحدیثقدسیمیںاللہتعالیٰکاارشادہےکہمیںخودہیروزہکابدلہہوں۔(صحیحبخاری) اسسےزیادہاللہکاکیاقربہوگاکہاللہجلشانہخودہیروزہکابدلہہے۔ نیزحضوراکرمﷺکاارشادہےکہتینشخصکیدعاردنہیںہوتیہے،انتیناشخاصمیںسےایکروزہدارکیافطارکےوقتکیدعاہے۔ حضوراکرمﷺنےارشادفرمایاکہخوداللہتعالیٰاوراسکےفرشتےسحریکھانےوالوںپررحمتنازلفرماتےہیں۔ (صحیحابنحبان)
عنداللہاجرعظیمکاحصول:اسبرکتوںکےمہینہمیںہرنیکعملکااجروثواببڑھادیاجاتاہے۔ اللہتعالیٰنےہرعملخیرکادنیامیںہیاجربتادیاکہکسعملپرکیاملےگامگرروزہکےمتعلقحدیثقدسیمیںاللہتعالیٰارشادفرماتاہے: الصَّوْمُلِیوَانَااَجْزِیْبِہروزہمیرےلئےہےاورمیںخوداسکابدلہدوںگا۔ بلکہایکروایتکےالفاظیہہیںکہمیںخودہیروزہکابدلہہوں۔ اللہاللہکیساعظیمالشانعملہےکہاسکابدلہساتوںآسمانوںوزمینوںکوپیداکرنےوالاخودعطاکرےگایاوہخوداسکابدلہہے۔ روزہمیںعموماًریاکاپہلودیگراعمالکےمقابلہمیںکمہوتاہےاسیلئےاللہتعالیٰنےروزہکواپنیطرفمنسوبکرکےفرمایاالصَّوْمُلِیروزہمیرےلئےہے۔
لہذاہمیںماہرمضانکیقدرکرنیچاہئےکہدنمیںروزہرکھیں،پنچوقتہنمازکیپابندیکریںکیونکہایمانکےبعدسبسےزیادہتاکیدقرآنوحدیثمیںنمازکےمتعلقواردہوئیہے۔ حضوراکرمﷺکیآخریوصیتبھینمازکےاہتمامکیہیہے۔ کلقیامتکےدنسبسےپہلاسوالنمازہیکےمتعلقہوگا۔ نمازتراویحپڑھیںاوراگرموقعملجائےتوچندرکعاتراتکےآخریحصہمیںبھیاداکرلیں۔ فرضنمازوںکےعلاوہنمازتہجدکاذکراللہتعالیٰنےاپنےقرآنکریممیںمتعددمرتبہفرمایاہے۔
رمضانکےآخریعشرہمیںتہجدپڑھنےکااہتمامکریںکیونکہحضوراکرمﷺکےاقوالوافعالکیروشنیمیںامتمسلمہکااتفاقہےکہلیلۃالقدررمضانکےآخریعشرہمیںپائیجاتیہےجسمیںعبادتکرنےکواللہتعالیٰنےہزارمہینوںیعنیپوریزندگیکیعبادتسےزیادہافضلقراردیاہے۔ اسیاہمراتکیعبادتکوحاصلکرنےکےلئے۲ہجریمیںرمضانکےروزےکیفرضیتکےبعدسےحضوراکرمﷺہمیشہآخریعشرہکااعتکاففرمایاکرتےتھے۔ اللہتعالیٰہمسبکواسمبارکماہکیقدرکرنےوالابنائےاورشبقدرمیںعبادتکرنےکیتوفیقعطافرمائے۔
جسطرحہمروزہمیںکھانےپینےاورجنسیشہوتکےکاموںسےاللہتعالیٰکےحکمکیوجہسےرکےرہتےہیںاسیطرحہماریپوریزندگیاللہتعالیٰکےاحکامکےمطابقہونیچاہئے،ہماریروزیروٹیاورہمارالباسحلالہو،ہماریزندگیکاطریقہحضوراکرمﷺاورصحابہکراموالاہوتاکہہماریروحہمارےجسمسےاسحالمیںجداہوکہہمیں،ہمارےوالدیناورسارےانسوجنکاپیداکرنےوالاہمسےراضیوخوشہو۔ دارفانیسےداربقاکیطرفکوچکےوقتاگرہمارامولاہمسےراضیوخوشہےتوانشاءاللہہمیشہہمیشہکیکامیابیہمارےلئےمقدرہوگیکہاسکےبعدکبھیبھیناکامینہیںہے۔
اللہتعالیٰسےدعاہےکہاسماہمبارکمیںزیادہسےزیادہاپنیعبادتکرنےکیتوفیقعطافرمائےاوررمضانکےصیاموقیاماورتماماعمالصالحہکوقبولفرمائے۔ رمضانکےبعدبھیمنکراتسےبچکراحکامخداوندیکےمطابقیہفانیوعارضیزندگیگزارنےوالابنائے۔ آمین،ثمآمین۔