قومی یکجہتی کی مثال: ہندو خاتون کی میت کومسلم نوجوانوں نے دیاکندھا


بھوپال:30اپریل(نیانظریہ بیورو)
قومی یکجہتی کی ایک اور بڑی مثال مدھیہ پردیش کی راجدھانی بھوپال میں دیکھنے میں آئی ہے، جب ایک ہندو عورت کی ارتھی کوپڑوس میں رہنے والے مسلمان نوجوانوں نے کندھادیا۔ راجدھانی کے اولڈ سبھاش نگر میں ایک 55 سالہ ہندو عورت کی موت ہوگئی۔ جس کے بعد اس کے کنبے والے نہیں پہنچے ، تب وہاں مقیم مسلم برادری کے افراد نے ہندو روایت کے ساتھ آخری رسومات ادا کیں۔بتایاجاتاہے کہ اس خاتون کی موت کے دوران ، اس کے گھر میں کوئی نہیں تھا اور کورونا کی وجہ سے پورے ملک میں لاک ڈاو¿ن لاگو ہونے کی وجہ سے ، خاتون کے لواحقین وقت پر بھوپال نہیں پہنچ سکے۔ جس کی وجہ سے یہ طے کیاگیا کہ لاش کوزیادہ دیرتک رکھناٹھیک نہیں ہے۔جس کے بعد پڑوس میں رہنے والے مسلم نوجوان آگے آئے ۔ اہم بات یہ ہے کہ لاک ڈاو¿ن کے دوران راجدھانی میںیہ دوسرا ایسا واقعہ ہے ۔ اسی طرح کا معاملہ گزشتہ دنوں ٹیلہ جمالپورہ پولیس اسٹیشن میں بھی سامنے آیاتھا جہاں ایک ہندو عورت کی ارتھی کومسلم نوجوانوں نے نہ صرف کندھادیاتھا بلکہ ہندوروایت کے مطابق آخری رسوم بھی اداکی تھی۔جس کے بعدفرقہ پرستوں کے منھ پرزوردارطمانچہ پڑاتھا۔اس کے بعد تمام طبقے کے افراد نے اس طرح کے عمل کوقومی یکجہتی کوفروغ دینے سمیت مسلم نوجوانوں کی تعریف کی تھی۔