سات سالہ فاطمہ نے رکھاروزہ، کورونا کے خاتمے کےلئے کی دعا


بھوپال :27اپریل(نیانظریہ بیورو)
رمضان المبارک کامہینہ خیروبرکت کامہینہ ہوتاہے۔اس مہینے کی مسلمانوں کوبے صبری سے انتظار رہتاہے۔وہیں بچوں میں بھی اسلامی جذبے کے تئیں اس ماہ میں خوشی دوبالاہوجاتی ہے۔اسلامی تربیت سے مالامال ایک سات سالہ فاطمہ نے اللہ کوراضی کرنے کے مقصدسے تیز دھوپ میں بھوک وپیاس کی شدت کوبالائے طاق رکھ کرروزہ رکھا۔ اوردعاءکی کہ اللہ تعالی پوری دیناکواس کوروناجیسی مہلک بیماری سے محفوظ کردے۔واضح رہے کہ سات سالہ فاطمہ بانو کھتری کی زندگی کایہ پہلا روزا ہے۔یہ دینی تربیت کاہی نتیجہ ہے کہ بچوں میں روزہ رکھنے کی صلاحیت پیداہوئی ۔بچی نے تیز دھوپ کی پرواہ کیے بغیر روزہ کو برقرار رکھا۔ اس مقصدکوپانے کے لئے فاطمہ کوبھوک وپیاس کی شدت برداشت کرنی پڑی ۔جس کے بعدافطارکے وقت اس نے پوری دنیا میں امن وامان کی اللہ سے دعاءکی اورروزہ کھولا۔واضح رہے کہ فاطمہ کی عمرسات سال ہے۔