مرکزی حکومت نے نوٹ بندی کی طرح لاک ڈاون کاکیااعلان: کانگریس

مرکزی حکومت نے نوٹ بندی کی طرح لاک ڈاون کاکیااعلان: کانگریس
بھوپال:26اپریل(نیانظریہ بیورو)
کورونا وائرس کی زنجیر کو توڑنے کے لئے لاک ڈاو¿ن کی وجہ سے طرح طرح کی مصیبتیں پیدا ہوئیں ہیں۔ملک بھرمیں مزدور سڑکوں پر نظر آرہے ہیں۔ غریب طبقہ روٹی کے لئے پریشان ہے۔ مستقبل میں ، روزگار کا بحران کھڑا دکھائی دیتا ہے۔ کانگریس نے ان شرائط سے متعلق مرکزی حکومت کو نشانہ بنایا ہے۔ کانگریس کا کہنا ہے کہ مرکزی حکومت کی لاک ڈاو¿ن کے طور پر جیسے ہی کورونا منتقلی کا کوئی منصوبہ تیار نہیں کیا گیا ،جس کی وجہ سے ملکی معیشت میں رکاوٹ ثابت ہوا ہے۔ اس ملک کے عوام کو بہت لمبے عرصے تک تکلیف اٹھانا پڑے گی۔مدھیہ پردیش کانگریس کے ترجمان اجے سنگھ یادو کا کہنا ہے کہ نوٹ بندی کے وقت نریندر مودی حکومت نے جس طرح جلدبازی میں قدم اٹھایاتھا اور اس سے ملکی معیشت مکمل طور پر ٹوٹ گئی۔ اسی طرح ، لاک ڈاو¿ن میں بھی بغیرکسی تیاری کے پورے ملک میں نافذ کیا گیا ہے۔جس سے ملک کی معیشت کو سخت نقصان پہنچا ہے۔ 14 کروڑ سے زیادہ افراد اپنی ملازمت سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔ ایک اندازے کے مطابق 30 لاکھ کروڑ سے زائد کے کاروبار میں نقصان ہوا ہے۔اجے سنگھ یادو کا کہنا ہے کہ 30 جنوری کو ملک میں کورونا پہنچ چکا تھا۔ حکومت لاک ڈاو¿ن کو مرحلہ وار اور منصوبہ بند طریقے سے نافذ کرسکتی تھی، لیکن مودی حکومت کی جلد بازی سےملکی معیشت اور مزدوروں کو نقصان برداشت کرنا پڑا۔ ملک کی حکومت کورونا انفیکشن سے لڑنے کے لئے جی ڈی پی کا نصف فیصد صرف کررہی ہے۔ وہیں 15 سے 20 فیصد رقم دوسرے ممالک میں خرچ کی جارہی ہے۔