مزدوروں کی آواز اٹھانے پرحکومت نے بھوریاکے خلاف کی ایف آئی آر:کمل ناتھ


بھوپال:26اپریل(نیانظریہ بیورو)
عالمی لاک ڈاﺅن کے درمیان ریاستی مزدوروں کے لئے آواز اٹھانے پر جھابوا ایم ایل اے کانتی لال بھوریا پر ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔ جس کو لے کر کانگریس نے کہا ہے کہ یہ عوامی نمائندے کی آواز کو کچلنے کی کوشش کی ہے۔ کانتی لال بھوریا پر ایف آئی آر ہونے کے بعد سابق وزیراعلیٰ کمل ناتھ نے ٹویٹ کر حکومت کے خلاف محاذ کھول دیا ہے۔ سابق وزیراعلیٰ نے کہا ہے کہ جب یوپی حکومت کی پہل کے بعد ریاست میں کوٹا سے بچوں کو لانے کا مدعہ ہم نے اٹھایا تھا۔وہیں سابق وزیراعلیٰ کمل ناتھ نے کہا کہ مدھیہ پردیش کے غیرریاستی مزدوروں،آدیواسی بھائی بڑی تعداد میں گجرات ، مہاراشٹر ، راجستھان و دیگر ریاستوں میں پھنس گئے ہیں۔ دوگنی پریشانی میں مبتلا مزدور ں کے روز گار چھن جانے کے ساتھ ساتھ بھوکے مرنے کی حالت میں ہیں۔ انہیں واپس لانا چاہئے ۔ کانتی لال بھوریا کی حمایت کرتے ہوئے کمل ناتھ نے کہا کہ ہمارے ایم ایل اے ساتھی کانتی لال بھوریا نے جب اپنے علاقے کے ہزاروں آدیواسی بھائیوں کو ریاست واپس لانے کی آواز اٹھائی تو شیوراج حکومت نے ان پر معاملہ درج کرلیا ۔ ہم اس کارروائی کی مذمت کرتے ہیں۔وہیں انہوں نے حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنی اڑیل رویہ چھوڑکر ریاست کے ہزاروں آدیواسی بھائیوں،غیر ریاستی مزدوروں کو واپس لانے کا کام کرے۔غورطلب ہے کہ ایم ایل اے کانتی لال بھوریا نے اپنے علاقے کے ہزاروں غیرریاستی مزدوروں کی پریشانیوں پر غور کرنے کو لے کر میمورنڈم سونپا تھا۔ جس کو لے کر حکومت نے سماعت سے منع کردیا تھا۔ جس کے بعد اس لاک ڈاﺅن کے درمیان سوشل ڈسٹینسنگ کی پابندی کرتے ہوئے حکومت پر تاناشاہی کا الزام لگاتے ہوئے احتجا ج پر بیٹھ گئے تھے۔ جن کے ساتھ جھابوا ایم ایل اے کے بیٹے وکرانت بھوریا اور کانگریس کارکنان بھی شامل تھے۔جن کے بعد لاک ڈاﺅن کی خلاف ورزی کرنے پر ان سب کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔