آیوروید کو سائنٹفک طورپر مستند بنانا ہوگا: مودی

نئی دہلی، 26اپریل (یوا ین ائی) وزیراعظم نریندر مودی نے ملک کی قدیم طبی نظام آیوروید کو سائنسی اعتبار سے مستند بنانے پر زور دیتے ہوئے اتوار کو کہا کہ ہندستان نے اپنی ثقافت کے مطابق ہی کورونا وبا کے اس عالمی بحران میں دنیا کے ہر ضرورت مند ملک کو دوائیں مہیا کرائی ہیں۔
مسٹر مودی نے آکاشوانی پر اپنے ماہانہ پروگرام ’من کی بات‘ کے دوسرے حصے کی گیارہویں قسط میں اہل وطن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہندستان نے اپنے اقدار اور سوچ کے مطابق غیرممالک کو دوا بھیجنے کا فیصلہ کیا۔ انہوں نے کہاکہ بحران کے اس وقت میں دنیا کے لئے بھی، خوشحال ممالک کے لئے بھی دواوں کا بحران بہت زیادہ رہا ہے۔ یہ ایک ایسا وقت ہے کہ اگر ہندستان دنیا کو دوائیں نہ بھی دیتا تو کوئی ہندستان کو قصوروار نہیں مانتا۔ ہر ملک سمجھ رہا ہے کہ ہندستان کی ترجیح بھی اپنے شہریوں کی زندگی بچانا ہے لیکن ہندستان نے فطرت اور منفی سوچ سے بالاتر ہوکر فیصلہ کیا۔ہندستان نے اپنے کلچر کے مطابق فیصلہ کیا۔
وزیراعظم نے کہاکہ اسی طرح اس وقت پوری دنیا میں ہندستان کے آیوروید اور یوگ کی اہمیت کو بھی لوگ مخصوص انداز سے دیکھ رہے ہیں۔ ہر طرف مدافعتی صلاحیت بڑھانے کے لئے ہندستان کے آیوروید اور یوگ کی بات ہورہی ہے۔ کورونا کے نظریہ سے آیوش وزارت نے مدافعتی نظام بڑھانے کے لئے مشورے دیئے ہیں۔ گر م پانی، کاڑا اور دیگر رہنما ہدایات سے بہت فائدہ ہوگا۔
انہوں نے کہاکہ ویسے یہ بد قسمتی رہی ہے کہ کئی بار ہم اپنی طاقتوں اور خوشحال روایت کو پہچاننے سے انکار کردیتے ہیں لیکن جب دنیا کا کوئی دوسرا ملک ٹھوس ثبوتوں کی بنیاد پر وہی بات کرتا ہے، ہمارا ہی ہنر ہمیں سکھاتا ہے تو ہم اسے ہاتھوں ہاتھ لیتے ہیں۔