دموہ میں نابالغ کی عصمت دری پر حزب اختلاف چراغ پا


بھوپال:23اپریل(نیانظریہ بیورو)
سابقہ حکومت میں رابطہ عامہ کے وزیر رہنے والے پی سی شرما نے دموہ میں اقلیتوں کے ساتھ امن و امان پر سوال اٹھایا ہے ، دموہ میں ہونے والا واقعہ پرانہوں کہاہے کہ لوگ گھروں میں ہیں اور پولیس سڑک پر ہیں۔ اب بھی ایسے واقعات رونما ہورہے ہیں ۔واضح رہے بھوپال کے ایک اسپتال سے نابالغ کے ساتھ زیادتی کے واقعے پر شیو راج حکومت میں امن وامان پر سوالات حزب اختلاف سخت تنقیدکررہے ہیں۔
سابق وزیر پی سی شرما کا کہنا ہے کہ دموہ میں ایک 7 سالہ بچی کے ساتھ زیادتی ہوئی اور اس کی آنکھیں پھوڑدی گئیں۔ لاک ڈاو¿ن میں پولیس چوکس ہے جبکہلوگ سڑکوں پر نہیں ہیں۔ تب بھی ، اس طرح کے واقعات امن و امان پر سوال کھڑے کرتے ہیں۔
پی سی شرما کا مزیدکہنا ہے کہ ملزم بھوپال کے جے پی اسپتال سے لڑکی کو اٹھا کر اس کے ساتھ زیادتی کرتا ہے اور اسے جے پی ہاسپٹل میں چھوڑ دیتا ہے ، جبکہ ایم پی بورڈ بورڈ چوراہے پر اتنی پولیس موجود ہے کہ کوئی بھی وہاں سے گزرنہیں سکتا۔ ہمارے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی۔ جب یہ ہوسکتا ہے تو ، انہیں کیوں نہیں روکا گیا؟ مجموعی طور پر ، لاک ڈاو¿ن کے وقت امن وامان پر سوالیہ نشان اٹھایا جارہا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ کابینہ تشکیل دی گئی ہے ، محکمے بھی تقسیم ہوگئے ہیں ، لیکن امن و امان ٹوٹ گیا ہے۔