جمعیة علما ضلع بھوپال کا لاک ڈاون میں امدادی عمل تیز


بھوپال :22اپریل(نیانظریہ بیورو)
مدھیہ پردیش جمعیة علما کے صدر حاجی محمد ہارون کی ہدایات کے تحت جمعیة علما ضلع بھوپال کے صدر حافظ محمد اسمعیل بیگ نے حکومت ہند کے کورونا وایرس کے سد باب کے لئے احتیاطی طور پر لاک ڈاو¿ن کی مدت میں توسیع کرنے کے بعد عوام کے حالات مزید سنگین ہونے اور فاقہ کشی کے شکار جیسے عام حالات پیدا ہونے کے پیش نظر مختلف طریقوں سے امدادی و رفاہی عمل مستقل انجام دے رہے ہیں۔ضلع صدر نے بتایا کہ یہ لاک ڈاو¿ن کادوسرا مرحلہ چل رہا ہے جس میں عوام کے حالات بد سے بد تر ہو چکے ہیں ۔ اس دوران بے شمارخاندان میں فاقہ کشی کے بڑے سنگین حالات پیدا ہو چکے ہیں ۔معاشی تنگی سے مختلف خاندان کافی متاثرہیں۔مزدور اور متوسط طبقہ کے لوگوں کے حالات نا گفتہ بہ ہو چکے ہیں۔ ایسے وقت میں حکومت مدھیہ پردیش بھی ہر ممکن امداد میں لگی ہوئی ہے لیکن پھر بھی عوام کا بڑا طبقہ اس امداد سے محروم ہے ۔ان حالات کو سامنے رکھتے ہوئے جمعیة علما ضلع بھوپال روز اول سے ہی مستقل ایسے گھرانوں کا سروے کرکے انکو نہ صرف راشن پہنچا رہی ہے بلکہ تقریبا چالیس ایسے گھرانے ہیں جو سروے میں انتہائی مجبور نکل کر سامنے آئے ہیں انکو تو مستقل گود لے رکھا ہے اور ہر دس دن میں انکو دس دن کا مکمل راشن پہنچا یاجارہا ہے۔ اسی طرح ان گھرانوں کی نقدی امداد بھی کرتی آرہی ہے ۔مزید دوسرے گھرانوں میں روزانہ تقریبا دو سو کھانے کے پیکٹ بھی مہیا کروا رہی ہے۔اسی طرح حکومت مدھیہ پردیش کی امدادی منصوبوں سے لوگوں کو مستفید ہونے کے لئے خود اپنی ضلعی ٹیم سے سروے کراکر انکی فہرست تیار کرکے حکومتی کارندوں کو سونپ کر انکو منظور کرا کے براہ راست لوگوں تک وہ امداد بھی پہنچا رہی ہے۔ موجودہ لاک ڈاو¿ن میں حکومت کی پانچ کلو آٹا منصوبہ جو بغیر راشن کارڈ والوں کے لئے ہے، خود ضلع صدر نے بستی بستی کا دورہ کرکے ایسے لوگوں کی فہرست تیار کرکے انتظامیہ سے منظور کرا کے ان لوگوں تک آٹا پہنچایا جسکی شروعاتی مقدار تقریبا بیس(20) کونٹل تھی۔ جن ضرورت مندوں میں تقسیم ہوا وہ مختلف علاقوں کے تھے جس میں کوئی مذہبی تفریق نہیں کی گئی، بس ضرورت کو سامنے رکھ کر یہ امداد پہنچائی گئی۔ جیسے کلیان نگر فیس 1 اور فیس 2، چندن نگر ،اٹل نہرو نگر، بھانپور آواس ملٹی اور کروند کے کچھ علاقے شامل ہیں اور ان شا ءاللہ یہ انسانی ہمدردی پورے لاک ڈاو¿ن میں جاری رہیگی۔