ڈپٹی وزیراعلیٰ کا خواب دیکھنے والوں کوپکڑادیاجھنجھنا: جیتو پٹواری


بھوپال:22اپریل(نیانظریہ بیورو)
مدھیہ پردیش میں وزیراعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان کے ذریعہ منی کابینہ کی تشکیل کے بعد وزراءمیں محکموں کو تقسیم کردیا ہے۔ جس پر سابق وزیر جیتو پٹواری نے سخت تنقیدکی ہے۔ پٹواری کاکہناہے کہ وزیر بنانے کے بعد شیوراج نے محکمہ نہ دیتے ہوئے ڈویزن کی ذمہ داری سونپ دی ہے ، جب کانگریس نے احتجاج کیا تو محکموں کو وزراءمیں بانٹ دیا گیا ، جس پر جیتو نے وزیرکانام لئے بغیرطنزکیا ہے۔
پٹواری کا کہنا ہے کہ وہ لوگ جو ڈپٹی وزیراعلیٰ بننے کا خواب دیکھ رہے تھے ، انہیں جھنجھنا پکڑدادیاگیاہے۔ ان کا مزید کہنا ہے کہ محکمہ ٹرانسپورٹ کے خواہاں افراد کو بھی ان کی حیثیت کا پتہ چل گیا۔ وزیراعلی شیو راج پر نشانہ لگاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ شیو راج سنگھ بھی ایک ایک چالاک شخص ہیں۔ ایم جی ایم اور اورویندو جیسے میڈیکل کالجوں میں کورونا مریض ہیں۔ میڈیکل ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ میں تو وزیر بھی نہیں بنایا گیا گیا ، شیوراج کی حکومت مفلوج حکومت ہے اور وہ مدھیہ پردیش کو مزیدنیچے لے جانا چاہتی ہے۔
آج وزیر اعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان نے وزرا ءمیں محکموں کو تقسیم کردیا ہے۔ نروتم مشرا کو محکمہ داخلہ اور محکمہ صحت کی ذمہ داری ملی ہے۔ تلسی سلاوٹ کو محکمہ آبی وسائل ، کمل پٹیل کو محکمہ زراعت اور مینا سنگھ کو قبائلی بہبود کا محکمہ اور گوبند سنگھ راجپوت کو سول سپلائی اور صارف تحفظ اور تعاون محکمہ کی ذمہ داری دی گئی ہے۔