لاک ڈاون کی وجہ سے طلباءکا مستقبل خطرے میں، نیا تعلیمی سیشن بھی متاثر


آن لائن کلاسیز کے ذریعہ نصاب مکمل کرنے کی کوشش،مگر26کروڑ طلباءکوکورکرناآسان نہیں
بھوپال:19اپریل(نیانظریہ بیورو)
ملک میں لاک ڈاو¿ن کی وجہ سے اسکولوں کی تعطیلات کافیصلہ مارچ میں ہی لی گئیں ، یہاں تک کہ بورڈ کے امتحانات ملتوی کرنا پڑے۔کورونا کا یہ بحران کب تک جاری رہے گا؟یہ کہنا فی الحال مشکل ہے۔ اگر جون میں اسکول کھل جاتے ہیں ، تو پھر ایک مہینہ کتابیں ، کاپی ، بیگ ، سرکاری اور غیر سرکاری اسکولوں جیسے سامان خریدنے میں ضائع ہوجاتا ہے۔آن لائن کلاس کے ذریعے لاک ڈاو¿ن میں وقت کی تلافی کاکام شروع کر دیاگیا ہے۔بتایاجاتاہے کہ کورونا کی وجہ سے لاک ڈاو¿ن میں اسکول سیشن سے ہونے والے نقصان کی تلافی کے لئے سرکاری اسکولوں اور نجی اسکولوں نے آن لائن کلاسوں کے ذریعہ نصاب مکمل کرنے کی تیاری شروع کردی ہے ، تاکہ اسکول کے سیشن متاثر نہ ہوں۔ اسکولوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ اب جو کلاس آن لائن میڈیم کے ذریعے چلائے جا رہے ہیں ان کو دہرایا نہیں جائے گا۔ ایک ہی وقت میں سرکاری اسکولوں میں صرف 40 فیصد بچے آن لائن تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔ اس صورتحال میں نصاب مکمل کرنا ممکن نہیں ہے۔وہیںنجی اسکولوں کا کہنا ہے کہ وہ نصاب مکمل کر رہے ہیں ، جس کا تعلیمی سیشن پر کوئی خاص اثر نہیں پڑے گا۔ اگر اگست میں بھی سیشن کا آغاز ہوتا ہے ، تو ہم بچوں کو مزید تعلیم حاصل کرنے اور امتحانات پر توجہ دینے پر مجبور کریں گے۔اصل بات یہ ہے کہ یہ کورونا بحران کب تک جاری رہے گا ، اس پرفی الحال کچھ بھی کہانہیں جاسکتا۔ یہ فیصلہ کرنا مشکل ہے کہ اسکول اگست میں شروع ہوں گے یا نہیں۔ اس صورتحال میں طلباءکا مستقبل
خطرے میں ہے۔اس وقت ملک میں اسکول جانے والے تقریبا 26 کروڑ طلباءہیں۔ظاہر ہے کہ آن لائن کلاسوں کے ذریعہ شہروں میں اسکولوں کے نئے تعلیمی سیشن کا آغاز ہوچکا ہے ،جبکہ دیہی علاقوں میں معاشی طور پر کمزور طلباءاس معاملے میں بہت پیچھے ہیں۔ اب جب کورونا کا یہ بحران ختم ہوگا ، تو اس صورتحال میں یہ یقینی نہیں ہے کہ اب حکومت کے سامنے چیلنج یہ ہے کہ وہ اسکول کے ان طلباءکو کس طرح ان کے مستقبل پراثرنہیں پڑنے دیگی۔اس معاملے میں گورنمنٹ اساتذہ ایسوسی ایشن کے ریاستی کنوینر اپیندر کوشل کا کہنا ہے کہ لاک ڈاو¿ن میں سرکاری اسکولوں کے پسماندہ طبقے کے طلبا متاثر ہورہے ہیں۔ حکومت کو ان کے انتظامات کرنے چاہئیں تاکہ وہ بھی دوسرے بچوں کی طرح اپنا نصاب مکمل کرسکیں۔ لاک ڈاو¿ن میں تعلیمی سیشن متاثر ہوا ہے، اب اس کی تلافی کس طرح ہوگی اس کی ذمہ داری حکومت کی بھی ہوگی۔