لوگوں کوانسانوں سے نہیں کوروناسے کرنی چاہئے نفرت

وائرس سے جنگ جیت کرلوٹے ڈاکٹر:

بھوپال:19اپریل(نیانظریہ بیورو)
کچھ دن پہلے پولیس اور ڈاکٹروں کی ٹیم پر حملے ہوئے تھے، ، جنہیں 5 اپریل کو ایک نجی اسپتال میں انفیکشن ہونے کے بعد داخل کرایا گیا تھا۔ 14 دن کے بعد اب ان کی رپورٹ منفی آگئی ہے اور وہ اپنے گھر پہنچ گئے ہیں۔ لیکن پھر بھی وہ انتظامیہ کے اصولوں پر عمل پیرا ہیں اور وہ 14 دن تک اپنے گھر کے ایک کمرے میں قرنطینہ رہیں گے۔ اس دوران محکمہ صحت کے عہدیدار نے بھی ناراضگی کا اظہار کیا ہے اور لوگوں سے اپیل کی ہے کہ اگر انھیں نفرت کرنی ہے توکوروناوباءسے کریں نہ کہ انسانوں سے نفرت کریں۔ذرائع کے مطابق قومی صحت مشن میں کام کرنے والے نریندر جیسوال کا کہنا ہے کہ کچھ دن پہلے کورونا مثبت ہوگئے تھے ، لیکن اب وہ مکمل طور پر صحتمند ہیں۔ انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ کرونا مثبت مریضوں کے ساتھ غیر مہذبانہ سلوک نہ کریں۔ انہیں نفرت کی نگاہ سے نہ دیکھیں ، ڈاکٹروں اور پولیس اہلکاروں پر پتھر پھینکنے سے کوئی فائدہ نہیں بلکہ وہ آپ کوصحتیاب بنانے کی سمت میں کام کررہے ہیں۔ان کاکہنا ہے کہ اگرآپ نے ڈاکٹروں کاساتھ دیاتوکورونا کے مریض جلد صحت یاب ہوجائیں گے اور ایک بار پھرآپ ایک دوسرے کے سامنے ہونگے اور مل جل کرساتھ رہ سکیں گے۔ ایسے لوگوں سے ان لوگوں سے ہمدردی کی درخواست کی جاتی ہے جن کے کنبوں میں ایک شخص بھی انفکشن ہوا ہے۔ اگر وہ لوگ مدد نہیں کرسکتے ہیں توپریشانی بھی نہ بڑھائیں۔ ہر ایک کومحکمہ صحت کی جانب سے جاری تدابیراور اصولوں پر عمل کرنا چاہئے اور گھر میں رہنا چاہئے اور انسانوں سے نہیں بلکہ کورونا سے نفرت کرنا چاہئے۔