جنہیں کورونا سے بچایا انہیں بھوک سے مرنے نہیں دیں گے، کیرالہ کی وزیر صحت

تروانانت پورم: کیرالہ کی وزیر صحت کے کے شیلجا نے ہفتے کے روز کہا کہ ریاست نے کورونا وائرس کے پھیلاؤ پر قابو پانے کے لئے سخت محنت کی ہے جس کا پھل اب مل رہا ہے۔ ریاست میں فی الحال 138 کورونا کے مریضوں کا علاج چل رہا ہے اور گزشتہ ہفتے ریاست میں نئے معاملات کی تعداد سنگل ہندسوں میں تھی اور تقریباً 78000 افراد نگرانی میں رکھے گئے ہیں۔
کے کے شیلجا نے میڈیا کو بتایا کہ چاہے جو بھی ہو کیرالہ کی حکومت آرام سے نہیں بیٹھ سکتی، کیونکہ ’اگر ہم چوکس نہیں ہوئے تو، چیزیں کبھی بھی پریشانی پیدا کر سکتی ہیں، لیکن زندگی کو بھی آگے بڑھنا ہی ہوتا ہے۔‘‘
شیلجا نے کہا، ’’یہ نہیں ہونا چاہیے کہ جن لوگوں کو کورونا سے بچایا وہ بھوک سے مر جائیں۔ لہذا، 20 اپریل کے بعد جو بھی چھوٹ دی جانی ہیں اس کے درمیان لوگوں کو احتیاط سے غافل نہیں ہونے دینا چاہیے۔ جو بھی چھوٹ دی جائیں گی ان کا استعمال معیشت کی بحالی کے لئے ہونا چاہیے اور سوشل ڈسٹنسنگ کے تمام اصول و ضوابط پر عمل ہونا چاہیے۔‘‘
کیرالہ نے اعلان کیا ہے کہ جن 14 اضلاع نے جس انداز میں کورونا وائرس سے مقابلہ کیا ہے ان کا 4 مختلف علاقوں میں مطالعہ کیا جائے گا اور اس کی بنیاد پر 20 اپریل کو اعلانات کیے جائیں گے۔ ضلع کوٹئیم اور اڈوکی کو زیادہ چھوٹ ملے گی اور وہاں معلومات زندگی بحال ہو جائیں گی جبکہ دیگر 12 اضلاع میں کچھ سختی برقرار رہے گی۔ قومی رہنما خطوط کے مطابق ، زندگی آہستہ آہستہ معمول پر آجائے گی، یعنی دیگر 12 اضلاع میں نرمی کم ہوگی۔